بلوچستان: بڑی تعداد میں گولہ بارود برآمد

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

بلوچستان کے دارالحکوت کوئٹہ میں پولیس نے تخریب کاری کا ایک بڑا منصوبہ ناکام بنا دیا ہے اور بارود اور دیگر دھماکہ خیز مواد سے بھری دوگاڑیوں کو قبضے میں لے کر سات افراد کو حراست میں لیے لیا ہے۔

کوئٹہ سے بی بی سی کے نامہ نگار ایوب ترین کے مطابق پولیس نے بدھ اور جمعرات کی درمیانی شب کوئٹہ سے پچیس کلومیٹر دور کچلاک کے مقام پر ایک کارروائی کے دوران بارود سے بھری دوگاڑیاں پکڑ لیں۔ کارروائی کے دوران سات ملزمان کو بھی گرفتار کیا گیا ہے جن سے تحقیتات ہو رہی ہیں۔

اس سلسلے میں کوئٹہ کے سینیئر پولیس آفیسر میر زبیر نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ پکڑے جانے والے تخریبی مواد میں چھ ہزار بم، ایک سو پچیس اینٹی مائنز، تین ہزار ڈیٹونیٹرز اور دو ٹن بارودی مواد شامل ہیں۔

انہوں نے کہا کہ بارودی مواد کوئٹہ شہر میں تخریب کاری کے لیے لایا جا رہا تھا اورکچلاک پولیس نے بروقت کارروائی کر کے شہر کو بڑی تباہی سے بچا لیا۔

سی سی پی او کوئٹہ نے کچلاک پولیس کی کارکردگی کی تعریف کرتے ہوئے بتایا کہ صوبائی حکومت نے ایس ایچ او کچلاک جلال خان سمیت کارروائی میں حصہ لینے والے دیگر عملے کو ترقی دینے کے ساتھ ساتھ انعام دینے کا بھی فیصلہ کیا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ ملزمان پاک افغان سرحدی علاقے ژوب سے دھماکہ خیز مواد لا رہے تھے اور پولیس نے خفیہ اطلاع پر بروقت کارروائی کی۔ تاہم انہوں نے ملزمان کی شناخت نہ بتاتے ہوئے کہا کہ گرفتار ہونے والوں میں بعض کا تعلق افغانستان سے ہے۔

اسی بارے میں