شمالی وزیرستان میں ڈرون حملہ، تین افراد ہلاک

پاکستان کے قبائلی علاقے شمالی وزیرستان میں حکام کا کہنا ہے کہ ایک امریکی ڈرون حملے میں تین مشتبہ عسکریت پسند ہلاک ہوگئے ہیں۔

پولیٹکل انتظامیہ کے ایک اہلکار نے بی بی سی کو بتایا کہ جمعرات کی صبح شمالی وزیرستان کے صدر مقام میرانشاہ بازار میں بغیر پائلٹ کے امریکی جاسوس طیارے سے ایک مکان کو نشانہ بنایا گیا جس سے وہاں موجود تین مشتبہ شدت پسند مارے گئے۔

نامہ نگار رفت اللہ اورکززئی کے مطابق مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ مرنے والے جنگجوؤں کا تعلق پنجابی طالبان سے بتایا جاتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہلاک ہونے والے افراد کی لاشیں مقامی طالبان نے کسی نامعلوم مقام پر منتقل کردی ہے۔

گزشتہ چوبیس گھنٹوں میں شمالی وزیرستان میں یہ دوسرا ڈرون حملہ ہے۔ اس سے پہلے ایشا کے مقام پر بھی امریکی ڈرون طیارے سے ایک گاڑی کو نشانہ بنایا گیا تھا جس میں دو غیر ملکی ہلاک ہوئے تھے۔

خیال رہے کہ گزشتہ سال نومبر میں مہمند ایجنسی کے علاقے سلالہ میں پاکستانی چوکی پر ہونے والے نیٹو حملے کے بعد ڈرون حملوں میں کمی واقع ہوئی تھی تاہم چند ہفتوں سے ان حملوں ایک مرتبہ پھر تیزی دیکھنے میں آرہی ہے۔

اسی بارے میں