خیبر ایجنسی میں تشدد: چار افراد ہلاک

آخری وقت اشاعت:  جمعرات 13 ستمبر 2012 ,‭ 11:55 GMT 16:55 PST
خیبر ایجنسی

خیبر ایجنسی میں فوجی آپریشن جاری ہے جس کی وجہ سے لوگ نقلِ مکانی کر رہے ہیں۔

پاکستان کے قبائلی علاقے خیبر ایجنسی میں حکام کے مطابق تشدد کے دو مختلف واقعات میں ایک خاتون اور دو بچوں سمیت چار افراد ہلاک اور سات افراد زخمی ہوگئے ہیں۔ ہلاک ہونے والوں میں حکومت کی ایک حمایتی تنظیم کے رضا کار شامل ہیں۔

پولیٹکل انتظامیہ کے اہلکاروں نے بی بی سی کو بتایا کہ آدھی رات کے وقت تحصیل باڑہ میں اکا خیل مدا خیل میں ایک مکان پر مارٹر گولا آن گرا جس سے ایک خاتون اور دو بچے ہلاک، جب کہ چار افراد زخمی ہو گئے۔

مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ یہ گولا کسی نامعلوم مقام سے فائر کیا گیا تھا۔ یہ بھی معلوم نہیں ہو سکا کہ اس مکان کو کیوں نشانہ بنایا گیا ہے۔

یہ مکان ایک مقامی شخص سید کریم کا ہے جس کے بارے میں لوگوں کا کہنا ہے کہ اس کا کسی تنظیم سے تعلق نہیں ہے۔ مقامی لوگوں کے مطابق باڑہ اور خیبر ایجنسی کے دیگر علاقوں میں متحارب تنظیموں اور سیکیورٹی فورسز کے مابین جھڑپوں میں اکثر بے گناہ افراد کے مکان زد میں آجاتے ہیں جس سے معصوم بچے اور خواتین ہلاک ہوتے ہیں۔

چند روز پہلے بھی خیبر ایجنسی میں ہی ایک مکان پر مارٹر گولا گرنے سے خواتین اور بچوں سمیت سات افراد ہلاک ہو گئے تھے جس پر مقامی لوگوں نے سخت احتجاج کیا تھا۔

تحصیل باڑہ کے مختلف مقامات پر فوجی آپریشن بھی جاری ہے جہاں سے بڑی تعداد میں لوگ نقل مکانی کر کے نوشہرہ کے قریب جلوزئی کیمپ اور پشاور میں کرائے کے مکان لے کر رہ رہے ہیں۔

اس کے علاوہ ایک اور واقعے میں خیبر ایجنسی کی تحصیل لنڈی کوتل کے قریب زخہ خیل کے علاقے میں بکاڑ کے مقام پر سڑک کے کنارے ایک گاڑی کے قریب دھماکہ ہوا ہے۔ اس دھماکے میں حکومت کی حمایتی تنظیم توحید الاسلام کے رضا کاروں کو نشانہ بنایا گیا ہے۔

انتظامیہ کے اہلکاروں کا کہنا ہے کہ دھماکے میں گاڑی کا ڈرائیور ہلاک اور تین افراد شدید زخمی ہوئے ہیں۔ مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ یہ دھماکہ آئی ای ڈی یا خود ساختہ بم سے کیا گیا ہے جس میں چار رضا کار ہلاک ہوئے ہیں۔

مقامی لوگوں کے دعوے کی سرکاری سطح پر تصدیق نہیں ہو سکی ہے۔

اسی بارے میں

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔