’نااہل ارکان کے خلاف قانونی کارروائی ہوگی‘

آخری وقت اشاعت:  پير 24 ستمبر 2012 ,‭ 14:21 GMT 19:21 PST

کمیشن نے کاغذاتِ نامزدگی میں دوہری شہریت کے معاملے پر ترمیم کی بھی تجویز دے رکھی ہے

پاکستان کے الیکشن کمیشن نے سینیٹر رحمان ملک سمیت گیارہ دیگر نااہل کیے گئے ارکانِ پارلیمان کے خلاف اپنے کاغذاتِ نامزدگی میں غلط بیانی کرنے کے الزام کی وجہ سے قانونی کارروائی کا فیصلہ کیا ہے۔

چیف الیکشن کمشنر جسٹس ریٹائرڈ فخرالدین جی ابراہیم کی سربراہی میں ہونے والے ایک اعلیٰ سطحی اجلاس میں ان گیارہ ارکانِ پارلیمان کی نشستوں پر ضمنی انتخابات کے شڈیول کو جاری کرنے کا اعلان بھی کیا ہے۔

کمیشن کی جانب سے جاری ہونے ایک بیان کے مطابق کمیشن نے کاغذاتِ نامزدگی میں اس بابت ترمیم کی بھی تجویز دے رکھی ہے جو کہ صدرِ مملکت کے پاس زیرِ غور ہے۔

ان اراکینِ پارلیمان کو بیس ستمبر کو سپریم کورٹ نے دوہری شہریت رکھنے کی وجہ سے نا اہل قرار دے دیا تھا۔

کمیشن نے اس بات کا بھی فیصلہ کیا ہے کہ تمام ارکانِ پارلیمان سے ان کی شہریت کے بارے میں حلفیہ بیان لیا جائے گا۔

اس سے پہلے سپریم کورٹ نے دوہری شہریت رکھنے والے قومی اور صوبائی اسمبلیوں کے گیارہ ارکان کو نااہل قرار دیتے ہوئے ان سے تمام مراعات اور تنخواہیں واپس لینے کا حکم دیا تھا۔

عدالت نے کہا ہے کہ ان ارکان کے علاوہ وزیرِ داخلہ رحمان ملک بھی دو ہزار آٹھ کے بیانِ حلفی میں غلط بیانی کی وجہ سے امین نہیں رہے اور آئین کی رو سے ایسا شخص رکنِ پارلیمان بننے کا اہل نہیں رہتا۔

چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے تین رکنی بینچ نے اس معاملے سے متعلق دائر درخواستوں پر فیصلہ سناتے ہوئے کہا کہ آئین کے آرٹیکل باسٹھ اور تریسٹھ کی زد میں آنے والا فرد انتخاب میں حصہ لینے کا اہل نہیں ہوتا۔

عدالت نے الیکشن کمیشن سے کہا کہ وہ تمام اراکین پارلیمان سے دہری شہریت نہ رکھنے سے متعلق دوبارہ حلف لے۔

عدالتی فیصلے کے تحت رحمان ملک کے علاوہ جن ارکان کو نااہل قرار دیا گیا ہے ان میں فرح ناز اصفہانی، فرحت محمود خان، نادیہ گبول ، زاہد اقبال، اشرف چوہان، وسیم قادر ، احمد علی شاہ ، ندیم خادم، جمیل ملک، محمد اخلاق اور آمنہ بٹرشامل ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔