دوہری شہریت: منتخب نمائندگان کی طلبی

آخری وقت اشاعت:  اتوار 30 ستمبر 2012 ,‭ 21:09 GMT 02:09 PST

سپریم کورٹ نے مبینہ طور پر دوہری شہریت رکھنے والے منتخب نمائندگان کو دو اکتوبر کو عدالت میں طلب کیا ہے

عدالت نے وزیر داخلہ رحمان ملک کو دوہری شہریت رکھنے والے ارکانِ پارلیمان کے متعلق معلومات فراہم کرنے کے لیے دو اکتوبر کو طلب کیا ہے۔

اے پی پی نے سپریم کورٹ کی طرف سے جاری ہونے والی پریس ریلیز کا حوالہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ بیگم شہناز شیخ کو عدالت میں پیش ہونے کے لیے نوٹس جاری کردیے گئے ہیں اور ان کو صحافی عمر چیمہ کی طرف سے عدالت میں جمع کردہ جواب نامہ اور دوسرے کاغذات بھی بھیج دیے گئے ہیں۔

قومی اسمبلی کے ممبر غلام مجتبٰی رائے کو بھی سپریم کورٹ نے یہ وضاحت کرنے کے لیے طلب کیا ہے کہ آیا ان کے پاس کینیڈا کی شہریت ہے یا نہیں۔

اے پی پی کے مطابق عدالت نے صحافی عمر چیمہ کو طلب کیا ہے کہ وہ دوہری شہریت رکھنے والے منتخب نمائندوں کے مطلق کیے گئے اپنے دعوؤں کے بارے میں تفصیلی معلومات فراہم کریں تاکہ عدالت ایسے منتخب نمائندگان کے خلاف برابری کی بنیاد پر قانونی کارروائی کر سکے۔

اے پی پی کا کہنا ہے کہ وزیر داخلہ رحمان ملک نے بیس اکتوبر کو ایک پریس کانفرنس میں کہا تھا کہ کہ اگر سپریم کورٹ یا حکومت نے ان سے پوچھا تو وہ انھیں وفاقی پارلیمان اور صوبائی اسمبلیوں کے دوہری شہریت رکھنے والے ممبران کے نام فراہم کر دیں گے۔

سپریم کورٹ نے سیکریٹری انفارمیشن کو وزیر داخلہ کی پریس کانفرنس کا متن دو اکتوبر یا اس پہلے عدالت میں جمع کرنے کا حکم دیا ہے تاکہ بہ وقتِ ضرورت اسے استعمال کیا جا سکے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔