وزیرستان: ڈرون حملے میں عرب جنگجو ہلاک

آخری وقت اشاعت:  پير 1 اکتوبر 2012 ,‭ 04:36 GMT 09:36 PST

پاکستان ڈرون حملوں پر متعدد بار امریکہ سے احتجاج کر چکا ہے

پاکستان کے قبائلی علاقے شمالی وزیرستان میں امریکی جاسوس طیارے کے حملے میں ایک غیر ملکی جنگجو ہلاک ہو گیا ہے۔

مقامی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ ڈرون حملہ پیر کی صبح تحصیل میر علی میں شہر سے کوئی چار کلومیٹر دور گاؤں حیدر خیل کے علاقے ببر خیل میں کیا گیا۔

مقامی انتظامیہ کے ایک اہلکار نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ ڈرون سے ایک موٹر سائیکل سوار عرب جنگجو کو نشانہ بنایا گیا۔

ڈرون سے دو میزائل داغے گئے جن میں سے ایک موٹر سائیکل کے قریب اور دوسرا موٹر سائیکل پر جا لگا۔

ہلاک ہونے والے عرب جنگجو کی شہریت کے بارے میں معلوم نہیں ہو سکا اور نہ یہ معلوم ہو سکا ہے کہ وہ کوئی اہم رہنما تھے۔

سرکاری اہلکار کے مطابق ڈرون حملے کے نتیجے میں عرب جنگجو کی لاش بری طرح جھلس جانے کی وجہ سے ناقابل شناخت ہے۔

خیال رہے کہ گزشتہ ماہ ایک امریکی رپورٹ کے مطابق پاکستان کے قبائلی علاقوں میں امریکی ڈرون حملے عام شہریوں میں دہشت پھیلا رہے ہیں اور وہ مستقل خوف کے سائے میں زندگی گزرانے پر مجبور ہیں۔

رپورٹ کے مصنفین کے مطابق ڈرون حملوں میں زخمی ہونے والے افراد کی امداد کرنے والوں کو بھی موقع پر ہی دوسرا ڈرون حملہ کر کے نشانہ بنایا جاتا ہے۔

خیال رہے کہ پاکستان میں ڈرون حملوں پر حکومت متعدد بار امریکہ سے احتجاج کر چکی ہے جب کہ ملک کی مختلف سیاسی اور مذہبی جماعتوں نے بھی ڈرون حملوں کے خلاف احتجاجی مظاہرے کیے ہیں۔

پاکستان امریکہ سے مطالبہ کر چکا ہے کہ ڈرون حملوں کا مستقل حل تلاش کیا جانا چاہیے لیکن امریکہ کا موقف رہا ہے کہ دہشت گردوں کے خلاف ڈرون حملے ایک موثر ہتھیار ثابت ہو رہے ہیں اور ان ڈرون حملوں کا قانونی اور اخلاقی جواز موجود ہے۔

اسی بارے میں

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔