دوہری شہریت کا الزام، شہباز شریف کو نوٹس

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 5 اکتوبر 2012 ,‭ 19:51 GMT 00:51 PST

پاکستان کی سپریم کورٹ نے دوہری شہریت کے معاملے میں وزیرِ اعلی پنجاب شہباز شریف اور پنجاب اسمبلی میں قائد حزبِ اختلاف راجہ ریاض سمیت تین اخبارات کے مدیروں کو نوٹس جاری کرتے ہوئے انہیں سترہ اکتوبر کو طلب کیا ہے۔

سپریم کورٹ نے یہ نوٹسز راجہ ریاض کے اس بیان کے بعد جاری کیے جن میں انہوں نے میاں شہباز شریف پر دوہری شہریت رکھنے کا الزام عائد کیا تھا۔

سپریم کورٹ نے روزنامہ اساس، انگریزی روزنامہ نیوز اور ڈیلی ٹائمز کے مدیروں کو بھی عدالت میں طلب کیا ہے کیونکہ ان اخبارات نے چار اکتوبر کو راجہ ریاض کا یہ بیان شائع کیا ہے۔

عدالت نے راجہ ریاض اور اخبارات کے مدیروں سے عدالت میں بنفس نفیس پیش ہو کر اس حوالے سے ثبوت پیش کرنے کا حکم دیا ہے۔

عدالت نے وزیرِ اعلیٰ پنجاب کو جاری نوٹس میں کہا ہے کہ وہ بھی سترہ اکتوبر کو عدالت میں پیش ہو کر ان الزامات کے جواب میں اپنا دفاع کریں اور ثابت کریں کہ وہ آئین کی شق تریسٹھ ون سی کے مطابق رکنِ صوبائی اسمبلی ہونے کے اہل ہیں۔

انیس ستمبر کو دوہری شہریت سے متعلق دائر درخواستوں پر چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے تین رکنی بینچ نے فیصلہ سناتے ہوئے کہا تھا کہ آئین کے آرٹیکل باسٹھ اور تریسٹھ کی زد میں آنے والا فرد الیکشن میں حصہ لینے کا اہل نہیں ہوتا۔

اسی مقدمے میں سپریم کورٹ نے دوہری شہریت رکھنے والے قومی اور صوبائی اسمبلیوں کے گیارہ ارکان کو نااہل قرار دیتے ہوئے ان سے تمام مراعات اور تنخواہیں واپس لینے کا حکم دیا ہے۔نااہل قرار دیے جانے والے ارکان میں فرح ناز اصفہانی، فرحت محمود خان، نادیہ گبول ، زاہد اقبال، اشرف چوہان، وسیم قادر ، احمد علی شاہ ، ندیم خادم، جمیل ملک، محمد اخلاق اور آمنہ بٹرشامل ہیں۔

عدالت نے الیکشن کمیشن سے کہا ہے کہ وہ تمام اراکین پارلیمینٹ سے دہری شہریت نہ رکھنے دوبارہ حلف لے۔

اسی بارے میں

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔