’حکومت بلوچستان مسئلے کے حل کرنے کا عزم نہیں رکھتی‘

آخری وقت اشاعت:  منگل 9 اکتوبر 2012 ,‭ 19:21 GMT 00:21 PST

سماعت کے دوران عد الت کو بلوچستان میں شورش سے سب سے زیادہ متاثر ہونے والے ایک ضلع ڈیرہ بگٹی کے بارے میں بریفنگ بھی دی گئی

چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری نے کہا ہے کہ بلوچستان کا معاملہ پاکستان کا سب سے اہم مسئلہ ہے لیکن حکومت اور انتظامیہ ان حالات کی بہتری کا کوئی عزم اور جذبہ نہیں رکھتی ۔

چیف جسٹس نے یہ ریمارکس پیر کو بلوچستان کی صورتحال سے متعلق بلوچستان ہائی کورٹ بار ایسوسی ایشن کی جانب سے دائر کردہ درخواست کی سماعت کے دوران دیے۔

چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ لاپتہ افراد کے حوالے سے سپریم کورٹ میں حکومت کی جانب سے جو رپورٹ پیش کی گئی ہے ’وہ 99 فیصد جھوٹ ہے‘۔ انہوں نے استفسار کیا کہ’ کیا ’ڈیتھ اسکواڈز‘ بند ہو گئے ہیں؟ یہاں تو لوگ اب بھی اسلحہ لے کر دندناتے پھر رہے ہیں۔‘

چیف جسٹس نے بلوچستان میں فرقہ وارانہ ٹارگٹ کلنگ اور دیگر سنگین جرائم میں ملزمان کی عدم گرفتاری پر بھی برہمی کا اظہار کیا ۔

عدالت میں موجود بلوچستان اسمبلی کے سپیکر محمد اسلم بھوتانی نے کہا کہ وہ عدلیہ کے احترام میں یہاں آئے ہیں اور بلوچستان کی صورتحال سے کوئی بھی مطمئن نہیں ہے۔ انہوں نے اس معاملے کو اٹھانے پر سپریم کورٹ کا شکریہ بھی ادا کیا۔

چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ ’ہم چاہتے ہیں کہ ملک میں جمہوریت ہو۔‘ ان کا کہنا تھا کہ اگر حکومت آئین پر عمل نہیں کرے گی تو پھر آئین کے مطابق ہم حکم جاری کریں گے ۔کیا ہو گا آسمان تو نہیں گرے گا۔‘

سماعت کے دوران عد الت کو بلوچستان میں شورش سے سب سے زیادہ متاثر ہونے والے ایک ضلع ڈیرہ بگٹی کے بارے میں بریفنگ دی گئی۔

ہائی کورٹ بار ایسوسی ایشن کی جانب سے دائر اس درخواست میں صوبے کی ایک اہم پشتون قوم پرست جماعت پشتونخوا ملی عوامی پارٹی بھی فریق بن گئی ہے۔ سماعت کے دوران پارٹی کے رہنما عبد الرحیم زیارتوال نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ صوبے میں بڑے پیمانے پر آئین کی پامالی ہو رہی ہے اور وہاں پشتونوں کو امتیازی سلوک کا نشانہ بنایا جا رہا ہے اور وہ عدم تحفظ کا شکار ہیں ۔

چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کا یہ بھی کہنا تھا کہ چیف آف آرمی اسٹاف جنرل اشفاق پرویز کیانی نے بلوچستان میں مسائل کے حل کی آئین کے دائرے میں کسی بھی حل کی حمایت کی بات کر کے ایک بڑی بات کی ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔