بلوچستان میں گیارہ ہلاک، بیس زخمی

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 12 اکتوبر 2012 ,‭ 19:12 GMT 00:12 PST

بارودی سرنگ پھٹنے سے فرنٹیئر کور کے تین اہلکار ہلاک جبکہ پانچ زخمی ہو گئے

پاکستان کے صوبے بلوچستان کے دوعلاقوں ڈیرہ بگٹی اور سبی میں بم دھماکوں کے دو مختلف واقعات میں فرنٹیئرکور کےتین اہلکاروں سمیت کم از گیارہ افراد ہلاک اور بیس زخمی ہوگئے۔

سرکاری ذرائع کے مطابق سبی میں موٹرسائیکل میں نصب بم جبکہ ڈیرہ بگٹی میں دھماکہ بارودی سرنگ پھٹنے سے ہوا۔

سبی پولیس کے مطابق شہر کے وسطی علاقے نشتر روڈ پر واقع کریم چوک پر نامعلوم افراد نے موٹرسائیکل میں بم نصب کررکھا تھا جو زوردار دھماکے سے پھٹ گیا جس کے نتیجے میں کم ازکم آٹھ افراد ہلاک جبکہ تحصیلدار اور تین بچوں سمیت پندرہ افراد زخمی ہوگئے۔

دھماکہ شدید نوعیت کا تھا جس کے نتیجے میں پانچ دکانوں اورقریب کھڑی کئی گاڑیوں کو بھی شدید نقصان پہنچا۔

سبی پولیس کے مطابق بم دیسی ساختہ تھا جسے ایک موٹرسائیکل میں نصب کیا گیا تھا اور اس کا بظاہرٹارگٹ تحصیلدار سنی قاضی پرویز تھے جو دھماکے کے نتیجے میں شدید زخمی ہوئے ہیں جبکہ زخمی ہونے والے تینوں بچے بھی تحصیلدار سنی قاضی پرویز کے ساتھ تھے۔

بم دھماکے کا دوسرا واقعہ بلوچستان کے شورش زدہ علاقے ضلع ڈیرہ بگٹی میں پیش آیا۔

سرکاری ذرائع کے مطابق ڈیرہ بگٹی کے علاقے مرو میں نامعلوم افراد کی جانب سے بچھائی گئی بارودی سرنگ پھٹنے سے فرنٹیئر کور کے تین اہلکار موقع پر ہلاک جبکہ پانچ زخمی ہوگئے۔

بارودی سرنگ کے دھماکے سے ہلاک و زخمی ہونے والے اہلکاروں کو مقامی ہسپتال منتقل کر دیا گیاہے ۔

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔