مہمند میں دھماکہ، خودکش حملہ آور ہلاک

آخری وقت اشاعت:  پير 5 نومبر 2012 ,‭ 08:38 GMT 13:38 PST

ماضی میں بھی سکیورٹی چیک پوسٹس کو نشانہ بنایا جاتا رہا ہے

پاکستان کے قبائلی علاقے مہمند ایجنسی میں ایک خودکش دھماکے کے نتیجے میں حملہ آور ہلاک اور ایک شخص شدید زخمی ہو گیا ہے۔

مقامی انتظامیہ کے مطابق یہ واقعہ یکہ غنڈ کے بازار میں اس وقت پیش آیا جب سکیورٹی اہلکار نے ایک مشکوک نوجوان کو روکنے کی کوشش کی۔

حکام کے مطابق خود کش حملہ آور رکنے کی بجائے تیزی سے آگے بڑھا جس پر سکیورٹی پر مامور اہلکاروں نے اس پر فائرنگ کی۔

ان کا کہنا ہے کہ اسی دوران خودکش حملہ آور نے خود کو دھماکہ خیز مواد سے اڑا لیا جس کی زد میں آ کر ایک راہ گیر بھی شدید زخمی ہوگیا۔

دھماکے کے بعد لیویز کے اہلکاروں نے جائے حادثہ کو گھیرے میں لے لیا اور زخمی شخص کو ہسپتال منتقل کر دیا گیا۔

ادھر قبائلی علاقے شمالی وزیرستان میں نامعلوم افراد کی فائرنگ سے پاکستانی فوج کے ادارے فرنٹیئر ورکس آرگنائزیشن کا ایک ملازم ہلاک ہوگیا ہے۔

مقامی انتظامیہ کے مطابق فائرنگ کا یہ واقعہ پیر کی صبح ایجنسی کے صدر مقام میران شاہ کے قریب پیش آیا۔

انتظامیہ کا کہنا ہے کہ ایف ڈبلیو کی گاڑیوں کا قافلہ میران شاہ سے قطب خیل کی جانب جا رہا تھا کہ کار سوار مسلح افراد نے اس پر فائرنگ کی۔

حکام کے مطابق فائرنگ سے قافلے میں شامل ایک گاڑی کا ڈرائیور سید اکبر موقع پر ہی ہلاک ہوگیا۔

حملہ آور فائرنگ کے بعد فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔