ملالہ ڈے: غریب بچوں کے لیے مفت تعلیم کا اعلان

آخری وقت اشاعت:  ہفتہ 10 نومبر 2012 ,‭ 15:37 GMT 20:37 PST
ملالہ یوسفزئی کا دن

پاکستان کے عوام بہتر تعلیم حاصل کرنے کے خواہش مند ہیں: گورڈن براؤن

حکومتِ پاکستان نے اقوام متحدہ کی جانب سے ملالہ یوسفزئی دن منانے کی مناسبت سے غریب خاندانوں اور بلخصوص لڑکیوں کو پرائمری تک مفت تعلیم دینے سے متعلق وسیلہ تعلیم پروگرام شروع کیا ہے جس کے تحت غریب خاندانوں کے بچوں کو تعلیم دی جائے گی۔

پاکستانی حکومت کا کہنا ہے کہ اس سے غریب خاندانوں سے تعلق رکھنے والے تیس لاکھ سے زائد بچے اور بلخصوص لڑکیاں آئندہ چار برسوں کے دوران مفت تعلیم حاصل کرسکیں گے۔

اس پروگرام میں بینظیر بھٹو انکم سپورٹ پروگرام کے علاوہ دیگر بین الاقوامی ادارے بھی مالی معاونت فراہم کریں گے۔

دوسری جانب دنیا بھر کے دوسرے ملکوں کی طرح آج یعنی سنیچر کو پاکستان میں بھی ملالہ ڈے منایا جا رہا ہے۔ اس دن کی مناسبت سے اسلام آباد میں سرکاری سطح پر کسی قابل ذکر تقریب کا اہتمام تو نہیں کیا گیا البتہ صدر آصف علی زرداری، وزیر اعظم اور دیگر سیاسی رہنماؤں کی طرف سے بیانات جاری کیےگئے ہیں جس میں ملالہ یوسفزئی کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کرنے کے ساتھ ساتھ شدت پسندوں کی جانب سے ملالہ یوسفزئی پر حملے کی شدید مذمت کی گئی۔

صدر آصف علی زرداری نے اپنے پیغام میں کہا کہ ملالہ پر حملہ ہر بچے اور خطے کے مستقبل پر حملہ ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ ہم اس صورتحال میں ہاتھ پر ہاتھ رکھ کر نہیں بیٹھ سکتے کیونکہ ہمارے بچوں پر حملے ہو رہے ہیں، اس لیے فوری اقدامات کرنے کی ضرورت ہے۔ صدر کا کہنا تھا کہ تعلیم سے ہی غربت اور شدت پسندی کا خاتمہ کیا جاسکتا ہے۔

ملالہ یوسفزئی کا دن

ملالہ یوسفزئی کے ساتھ اظہارِ یک جہتی کے لیے پاکستان بھر میں سکولوں کے بچوں نے ان کی جلد صحتیابی کی دعا کی

اسلام آباد میں پیپلز پارٹی کے درجنوں کارکن نے ملالہ کی صحت کی جلدی بازیابی کے لیے بھی دعا کی اور ان کے مشن کو جاری رکھنے کے عزم کو دہرایا۔

وزیر اطلاعات قمر زمان کائرہ نے کراچی میں میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ملالہ یوسفزئی پر حملے کے واقعہ نے پوری قوم کو ہلا کر رکھ دیا ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ اب وقت آگیا ہے کہ عوام کھل کر ایسے عناصر کی مذمت کریں جو ملک میں شدت پسندی کو ہوا دے رہے ہیں۔

ملالہ ڈے کی مناسبت سے اقوام متحدہ کے جنرل سیکرٹری بان کی مون کی طرف سے ایک پیغام بھی جاری کیا گیا ہے۔ جس میں کہاگیا ہے کہ ملالہ یوسفزئی دنیا بھر میں لڑکیوں کے تعلیم حاصل کرنے کے حق کی علامت ہیں۔

قابل ذکر امر یہ ہے کہ اقوام متحدہ کی طرف سے ملالہ ڈے کی مناسبت سے دینی جماعتوں کی طرف سے کوئی بیان جاری نہیں کیاگیا۔

لاہور اور صوبے کے دیگر شہروں میں سکول کی طالبات نے ملالہ یوسف زئی کے ساتھ اظہار یکجہتی کے لیے ہاتھوں کی زنجیر بنائی۔ طالبات نے بینرز اور کتبے بھی اُٹھا رکھے تھے جس پر ملالہ یوسفزئی کے حق میں نعرے درج تھے۔

ملالہ یوسفزئی

ملالہ یوسفزئی کو طالبان کے ایک حملے میں زخمی ہونے کے بعد برطانوی شہر برمنگھم کے ایک ہسپتال لایا گیا تھا جہاں ان کا اب تک علاج جاری ہے

گلوبل ایجوکیشن سے متعلق اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل بان کی مون کے خصوصی نمائندے اور سابق برطانوی وزیر اعظم گورڈن براؤن نے وفاقی وزیر شیخ وقاص اکرم کے ساتھ میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ملالہ یوسفزئی نے دنیا بھر میں امن کا پیغام دیا ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ دنیا بھر کے متعدد ملک ملالہ یوسفزئی کے ساتھ اظہار یکجہتی منا رہے ہیں۔ سابق برطانوی وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ پاکستانی عوام بہتر تعلیم حاصل کرنے کی خواہش رکھتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ میں یہ پورے یقین کے ساتھ کہہ سکتا ہوں کہ جب تک ایسی لڑکیاں موجود ہیں جو سکول نہیں جا رہی ہیں، ملالہ ان کے لیے ایک مشعلِ راہ رہے گی۔

یاد رہے کہ گزشتہ ماہ نو اکتوبر کو ملالہ یوسفزئی پر حملے کے بعد انہیں ایک خصوصی جہاز کے ذریعے برطانیہ کے شہر برمنگھم کے کویئن ایلزبتھ ہسپتال لایا گیا تھا جہاں ان کا علاج اب تک جاری ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔