کالم نگار آردیشر کاؤس جی نہیں رہے

آخری وقت اشاعت:  ہفتہ 24 نومبر 2012 ,‭ 14:54 GMT 19:54 PST

کاؤس جی نے ڈان میں ہفتہ وار کالم نویسی سے شہرت پائی

پاکستان کے مقبول کالم نویس اردشیر کاؤس جی سنیچر کو کراچی کے ایک ہسپتال میں انتقال کرگئے۔ ان کی عمر چھیاسی برس تھی۔ کاؤس جی کے قریبی حلقوں کا کہنا ہے کہ وہ سینے کی تکلیف میں مبتلا تھے اورگزشتہ بارہ دن سے کراچی کے ایک ہسپتال کے انتہائی نگہداشت کے وارڈ میں داخل تھے۔

کاؤس جی تیرہ اپریل سنہ انیس سو چھبیس میں کراچی کے ایک متمول پارسی گھرانے میں پیدا ہوئے۔

انہوں نے ابتدائی تعلیم کراچی میں واقع بی وی ایس سکول سے حاصل کی اور ڈی جے سائنس کالج میں داخلہ لیا۔ گریجویشن کرنے کے بعد وہ نے اپنے والد کے کاروبار سے منسلک ہوگئے۔

انہوں نے سنہ انیس سو تریپن میں نینسی ڈِنشا سے شادی کی جن سے ان کے ایک بیٹا رستم اور ایک بیٹی ایوا ہیں۔ ایوا اپنا خاندانی کاروبار سنبھالتی ہیں جب کہ رستم امریکہ میں آرکیٹیک ہیں۔ نینسی ڈنشا کا سنہ انیس سو بانوے میں انتقال ہوچکا ہے۔

کاؤس جی نے ڈان میں ہفتہ وار کالم نویسی سے شہرت پائی۔ وہ انگریزی روزنامہ ڈان میں سنہ انیس سو اٹھاسی سے سنہ دو ہزار گیارہ تک کالم لکھتے رہے۔

انہوں نے اپنے کالموں کے ذریعے وفاقی اور صوبائی حکومتوں کے محکموں میں بدعنوانی، اقربا پروری، میرٹ کی پامالی اور دیگر موضوعات پر قلم اٹھایا۔

سابق وزیراعظم ذوالفقار علی بھٹو نے سنہ انیس سو تہتر میں آردیشر کاوسجی کو پاکستان ٹورزم ڈیولپمنٹ کارپوریشن کا مینیجنگ ڈائریکٹر مقرر کیا تھا۔

لیکن سنہ انیس سو چھہتر میں سابق وزیراعظم سے اختلافات کی وجہ سے انہوں بہتّر دن تک جیل میں رہنا پڑا۔ انہیں جیل میں ڈالے جانے کی وجہ اب تک بیان نہیں کی گئی لیکن کہا جاتا ہے کہ آردیشر کاؤس جی نے ذوالفقار علی بھٹو کے کئی اقدامات کو کھلے عام تنقید کا نشانہ بنانا شروع کر دیا تھا۔

کالم نویس کے علاوہ آردیشر کاؤس جی کو بزنس مین اور سماجی کارکن کی حیثیت سے بھی جانا جاتا ہے۔

انہوں نے کاؤس جی فاؤنڈیشن بھی قائم کی تھی جس کے ذریعے وہ مختلف تعلیمی اداروں کی مالی امداد کیا کرتے تھے اور ہونہار طالبعلموں کو مزید تعلیم حاصل کرنے کے لیے سکالر شپ بھی دیا کرتے تھے۔

ان کے انتقال پر مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والوں نے اپنے دکھ کا اظہار کیا ہے ۔

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔