’امریکہ پاکستان کو 688 ملین ڈالر دے گا‘

آخری وقت اشاعت:  منگل 18 دسمبر 2012 ,‭ 08:44 GMT 13:44 PST
وزیرستان میں پاکستانی پولیس اہلکار

کوولیشن سپورٹ فنڈز ادائیگیوں کا ایک جاری پروگرام ہے جو پاکستان کو فوجی کارروائیوں پر آنے والے اخراجات کے لیے دیا جاتا ہے۔

امریکہ نے تقریباً ڈھائی برس کے تعطل کے بعد پاکستان کو دہشتگردی کے خلاف جنگ کے اخراجات کی مد میں تقریباً سات سو ملین ڈالر دینے کا فیصلہ کیا ہے۔

امریکی اخبار نیورک ٹائمز کی ایک رپورٹ کے مطابق امریکی محکمۂ دفاع نے کانگریس کو اس فیصلے کے بارے میں رواں ماہ کے آغاز میں مطلع کر دیا ہے۔

اسامہ بن لادن کی ہلاکت کے لیے امریکی آپریشن کے بعد سے امریکہ اور پاکستان کے فوجی رشتے تناؤ کا شکار ہوگئے تھے اور ان میں گزشتہ برس نومبر میں سلالہ چیک پوسٹ پر امریکی حملے کے بعد مزید تلخی آ گئی تھی۔

تاہم اب رقم کی ادائیگی کے اس فیصلے کو دونوں ممالک کے فوجی رشتوں کی بحالی کی کوشش سمجھا جا رہا ہے۔

امریکی دفترِ خارجہ کی ایک ترجمان نیرہ حق نے بی بی سی اردو سے بات کرتے ہوئے اس فیصلے کی تصدیق کی۔ انہوں نے کہا کہ یہ فیصلہ اس بات کی مثال ہے کہ امریکہ پاکستانی عوام اور فوج کا ساتھ دینا چاہتا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ دہشتگردی کے خلاف جنگ میں باہمی تعاون بہت ضروری ہے اور امریکہ جانتا ہے کہ اس جنگ میں پاکستان سے زیادہ متاثر ملک اور کوئی نہیں ہے۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ اب جبکہ ادائیگی کا سلسلہ شروع ہوا ہے تو مزید ادائیگیاں بھی ہوں گی۔

نیویارک ٹائمز کے مطابق پاکستان کو دیے جانے والے چھ سو اٹھاسی ملین ڈالر جنوری دو ہزار گیارہ سے نومبر دو ہزار گیارہ کے درمیان افغان سرحد پر تعینات پاکستان کے ایک لاکھ چالیس ہزار فوجیوں کی خوراک ہتھیاروں اور دیگر اخراجات کی مد میں دی جا رہی ہے۔

"یہ فیصلہ اس بات کی مثال ہے کہ امریکہ پاکستانی عوام اور فوج کا ساتھ دینا چاہتا ہے۔۔۔دہشتگردی کے خلاف جنگ میں باہمی تعاون بہت ضروری ہے اور امریکہ جانتا ہے کہ اس جنگ میں پاکستان سے زیادہ متاثر ملک اور کوئی نہیں ہے۔۔۔اب جبکہ ادائیگی کا سلسلہ شروع ہوا ہے تو مزید ادائیگیاں بھی ہوں گی۔"

نیرہ حق، ترجمان امریکی محکمۂ خارجہ

پاکستان کو دہشتگردی کے خلاف جنگ کے اخراجات کی مد میں ادائیگیوں کا سلسلہ اسامہ بن لادن کی ہلاکت کے بعد سے معطل تھا۔

رواں برس کے آغاز میں پاکستانی دفترِ خارجہ کے ترجمان نے بی بی سی اردو کو بتایا تھا کہ جون دو ہزار دس سے امریکہ نے پاکستان کو ’ کولیشن سپورٹ فنڈ‘ کی مد میں کوئی ادائیگی نہیں کی ہے اور یہ تقریباً ڈیڑھ ارب ڈالر کی رقم بنتی ہے۔

پینٹاگون کی جانب سے اس رقم کے بارے میں کانگریس کو آگاہ کرنے پر کوئی شدید ردعمل نہیں آيا ہے۔

نیویارک ٹائمز کے مطابق اس بارے میں امریکی اور پاکستانی حکام کا کہنا ہے کہ پینٹاگون کے اس فیصلے پر نکتہ چینی نہ ہونا اس بات کی طرف اشارہ ہے کہ نیٹو کے لیے رسد کی فراہمی کی بحالی کے بعد سے دونوں ممالک کے رشتے بہتر ہورہے ہیں۔

کوولیشن سپورٹ فنڈز ادائیگیوں کا ایک جاری پروگرام ہے جو پاکستان کو فوجی کارروائیوں پر آنے والے اخراجات کے لیے دیا جاتا ہے۔ امریکہ کا کہنا ہے کہ وہ سنہ دو ہزار ایک سے اب تک پاکستان کو اس فنڈ کی مد میں آٹھ ارب ڈالر سے زائد رقم کی ادائیگی کر چکا ہے۔

تاہم پاکستانی عسکری ذرائع کا کہنا تھا کہ اس رقم میں سے پاکستانی فوج کو صرف ڈیڑھ ارب ڈالر ہی مل پائے ہیں جبکہ باقی تمام رقم حکومت کے پاس ہی ہے۔

امریکی اس فنڈ کی مد میں پاکستان سمیت ستائیس ممالک کو ادائیگیاں کرتا ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔