ملالہ ڈگری کالج غیر معینہ مدت کے لیے بند

آخری وقت اشاعت:  منگل 18 دسمبر 2012 ,‭ 02:11 GMT 07:11 PST

انتظامیہ نے کالج کے مرکزی دروازے پر تحریر نئے نام پر سیاہی پھیر دی ہے

پاکستان کے صوبہ خیبر پختونخوا کے ضلع سوات میں گرلز کالج کا پرانا نام بحال کروانے کے حق میں طلبہ کے مظاہروں کے بعد کالج کو غیر معینہ مدت کے لیے بند کر دیا گیا ہے۔

خواتین میں حصولِ تعلیم کے فروغ کے لیے ملالہ کی خدمات کے اعتراف میں خیبر پختونخوا کی صوبائی حکومت نے حال ہی میں گورنمنٹ ڈگری کالج سیدو شریف کا نام تبدیل کر کے ملالہ ڈگری کالج رکھا تھا۔

نام کی اس تبدیلی پر اس کالج کی طالبات نے ماہِ رواں کے آغاز میں مظاہرہ کیا تھا اور نام تبدیل کرنے کے لیے حکومت کو تین دن کا الٹی میٹم بھی دیا تھا۔

طالبات کا مطالبہ تھا کہ ملالہ یوسفزئی سے منسوب کیے جانے والے گرلز کالج کا پرانا نام بحال کیا جائے۔

ان طالبات کا موقف تھا کہ کالج کو ملالہ سے منسوب کر کے ان کی زندگیاں خطرے میں ڈالی جا رہی ہیں۔

مظاہرے کے دوران ڈگری کالج کی طالبات نے کالج کی دیواروں پر چسپاں ملالہ کے پوسٹر پھاڑے اور ان پر کیچڑ مل دی تھی۔

پیر کو اس مہم میں طالبات کے ساتھ طلبہ بھی شریک ہو گئے تھے اور انہوں نے پیر کو مظاہرے کیے تھے۔ اطلاعات کے مطابق منگل کو بھی طلبہ نے دوبارہ مظاہرہ کرنے کا اعلان کیا تھا۔

اب انتظامیہ نے اگرچہ کالج کے مرکزی دروازے پر تحریر نئے نام پر سیاہی پھیر دی ہے لیکن سرکاری طور پر نام کی تبدیلی کا کوئی اعلان نہیں کیا گیا ہے جبکہ کالج انتظامیہ نے طالبات کو مطلع کیا ہے کہ کالج کو غیر معینہ مدت کے لیے بند کردیا گیا ہے۔

مینگورہ سے تعلق رکھنے والی ملالہ یوسفزئی رواں برس اکتوبر میں طالبان کے ہدف بنا کر کیے گئے حملے میں زخمی ہوگئی تھیں اور اب برطانیہ میں زیرِ علاج ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔