رسالپور: دستی بم حملہ، فوجیوں سمیت آٹھ زخمی

آخری وقت اشاعت:  منگل 18 دسمبر 2012 ,‭ 11:09 GMT 16:09 PST

دھماکے کے بعد سکیورٹی اہلکاروں نے جائے حادثہ کو گھیرے میں لے لیا

پاکستان کے صوبہ خیبر پختونخوا کے شہر رسالپور میں دستی بموں کے حملے میں آٹھ افراد زخمی ہوگئے ہیں۔

مقامی پولیس ذرائع نے بی بی سی اردو کو بتایا کہ یہ حملہ منگل کی صبح نوشہرہ مردان روڈ پر واقع ملٹری انجینیئرنگ کالج کے دروازے پر ہوا

ذرائع کے مطابق حملہ آوروں نے بھرتی کے لیے جمع ہونے والے افراد پر تین دستی بم پھینکے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ بم پھینکنے کے بعد حملہ آور جائے وقوع سے فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے۔

حکام کے مطابق دھماکے میں زخمی ہونے والوں میں تین فوجی اور پانچ عام شہری شامل ہیں۔

دھماکے کے بعد سکیورٹی اہلکاروں نے جائے حادثہ کو گھیرے میں لے لیا اور زخمیوں کو ہسپتال پہنچایا۔

اس واقعے کے بعد علاقے میں سکیورٹی اہلکاروں نے سرچ آپریشن بھی شروع کیا ہے تاہم ابھی تک کوئی گرفتاری عمل میں نہیں آئی ہے۔

خیبر پختونخوا میں شدت پسندوں کے حملوں میں اچانک تیزی دیکھی گئی ہے اور رواں ہفتے ہی دس شدت پسندوں نے پشاور کے ہوائی اڈے کو نشانہ بنانے کی کوشش کی تھی۔

کالعدم تحریک طالبان پاکستان کے مرکزی ترجمان احسان اللہ احسان نے نامعلوم مقام سے بی بی سی کو فون کر کے اس حملے کی زمہ داری قبول کی ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔