گرفتاریاں اور لیڈی ہیلتھ ورکرز کا احتجاج

آخری وقت اشاعت:  بدھ 19 دسمبر 2012 ,‭ 16:30 GMT 21:30 PST

پولیو مہم کے رضاکار عدم تحفظ کا شکار

کراچی میں محکمہ صحت کا کہنا ہے کہ جب تک سکیورٹی فراہم نہیں کی جائےگی پولیو مہم بحال نہیں ہوگی۔گلشن بونیر کی پولیو نگران نے ملازمت سے مستعفی ہونے کا فیصلہ کیا ہے۔ ان کے گھروں سے صرف آدھے کلومیٹر دور دو رضاکاروں کو ہلاک کیا گیا تھا۔ رپورٹ: ریاض سہیل

دیکھئیےmp4

اس مواد کو دیکھنے/سننے کے لیے جاوا سکرپٹ آن اور تازہ ترین فلیش پلیئر نصب ہونا چاہئیے

متبادل میڈیا پلیئر چلائیں

پاکستان کے سب سے بڑے شہر کراچی میں پولیس نے پولیو مہم کے دوران حملوں میں ہلاک ہونے والی چار رضاکار خواتین کے قتل میں ستائیس کے قریب افراد کو گرفتار کیا ہے۔

پولیس کے ترجمان شوکت عمران کا کہنا ہے کہ واقعے میں ملوث کوئی ملزم ابھی تک گرفتار نہیں ہو سکا ہے تاہم پولیس کی تفتیش اور پولیو مہم کے علمے کو ملنے والی دھمکیوں کی روشنی میں یہ گرفتاریاں کی گئی ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ محکمۂ پولیس نے تمام ڈی آئی جیز کو ہدایت کی تھی کہ وہ پولیو ٹیموں کے ساتھ رابطے میں رہیں مگر عملے نے پولیس کو آگاہ نہیں کیا۔ اب ایس ایچ اوز کو ہدایت کی گئی ہے کہ اگر ان سے کوئی رابطہ نہیں کرتا تو وہ خود میں آئیں۔

’جو اطلاعات پولیس کے پاس ہوتی ہیں وہ محکمۂ صحت کے پاس نہیں ہو سکتیں‘۔

دوسری جانب ہلاک ہونے والی چاروں خواتین کی منگل کی رات کو ہی تدفین کردی گئی تھی جبکہ نامعلوم ملزمان کے خلاف قتل کا مقدمہ درج کیا گیا ہے۔

دوسری جانب لیڈی ہیلتھ ورکرز نے کراچی پریس کلب پر جمع ہوکر احتجاج کیا۔

ان ورکرز کا مطالبہ تھا کہ انہیں تحفظ فراہم کیا جائے اور ہلاک ہونے والی رضاکار خواتین کے لیے معاوضے کا اعلان کیا جائے، صوبائی حکومت کی جانب سے اس سلسلے میں کوئی اعلان سامنے نہیں آیا تھا۔

صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر صغیر احمد نے ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جب تک سکیورٹی فراہم نہیں کی جاتی مہم بحال نہیں ہوگی۔

’ہم صورتحال پر غور کریں گے اگر صورتحال بہتر محسوس ہوئی تو مہم کا آغاز کریں گے، اس سے پہلے یہ بات زیر غور نہیں آئی تھی کہ رینجرز کو شامل کیا جائے مگر اب ضرورت پیش آئی تو یہ بھی ممکن ہو سکتا ہے‘۔

یاد رہے کہ ڈبلیو ایچ او نے مہم جاری رکھنے کا عزم دہرایا ہے، حملوں کے واقعات کراچی میں پیش آنے کے باوجود صوبے بھر میں یہ مہم معطل ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔