کوئلے کی کان میں دھماکا، سات کان کن ہلاک

آخری وقت اشاعت:  پير 24 دسمبر 2012 ,‭ 07:05 GMT 12:05 PST
فائل فوٹو

پاکستان میں ماضی میں بھی کوئلے کی کانوں میں حادثات پیش آتے رہے ہیں

پاکستان کے قبائلی علاقے اورکزئی ایجنسی میں کوئلے کی کان میں دھماکے سے سات کان کن ہلاک ہو گئے ہیں۔

مقامی انتظامیہ کے مطابق یہ حادثہ لوئر اورکزئی میں ڈولی کے مقام پر پیش آیا ہے۔

انتظامیہ کے اہلکار نے بی بی سی کو بتایا کہ علاقے میں واقع کوئلے کی کان کی چھت اس وقت بیٹھ گئی جب اس میں گیس بھر جانے سے دھماکا ہوا۔

اہلکار کا کہنا تھا کہ چھت تلے دب کر موقع پر موجود سات کان کن ہلاک ہوگئے۔

انہوں نے بتایا کہ حادثے کی اطلاع ملتے ہی امدادی کارروائیاں شروع کر دی گئیں اور ہنگو سے امدادی ٹیمیں طلب کی گئیں۔

اہلکار کے مطابق امدادی ٹیموں نے پیر کی صبح تک امدادی آپریشن مکمل کر لیا اور ساتوں ہلاک شدگان کی لاشیں نکال لی گئیں۔

ہلاک ہونے والے تمام افراد کا تعلق سوات کے علاقے شانگلہ سے بتایا گیا ہے اور ان کی لاشیں آبائی علاقے کو روانہ کر دی گئی ہیں۔

مقامی آبادی کے مطابق جس جگہ حادثہ پیش آیا وہاں تین سو کے قریب کوئلے کی کانیں ہیں اور یہاں پہلے بھی ایسے حادثات رونما ہوتے رہے ہیں جن میں متعدد افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔

پاکستان میں کان کنی کے شعبے میں حفاظتی انتظامات کے ناقص ہونے کی شکایات سامنے آتی رہی ہیں اور ملک میں پہلے بھی کانوں میں حادثے پیش آتے رہے ہیں۔

گزشتہ برس بلوچستان کے علاقے سپن کاریز میں میتھین گیس بھر جانے کے باعث کوئلے کی ایک کان میں دھماکہ ہواتھا جس کے نتیجے میں تینتالیس کان کن ہلاک ہوئے تھے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔