پاکستان بھارت سرحدی جھڑپ، 1 پاکستانی فوجی ہلاک

آخری وقت اشاعت:  اتوار 6 جنوری 2013 ,‭ 07:38 GMT 12:38 PST

بھارت اور پاکستان کے درمیان نومبر 2003 میں متنازعہ کشمیر کو تقسیم کرنے والی لائن آف کنٹرول پر فائر بندی کا معاہدہ ہوا تھا۔فائل فوٹو

پاکستان کے زیر انتظام کشمیر کے علاقے باغ میں پاکستانی اور بھارتی افواج کے درمیان ایک چھڑپ میں ایک پاکستانی فوجی ہلاک جبکہ ایک زخمی ہو گئے ہیں۔

پاکستانی افواج کے ترجمان ادارے انٹر سروسز پبلک ریلیشنز کے ایک اعلیٰ افسر نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ بھارتی افواج نے لائن آف کنٹرول کی خلاف ورزی کرتے ہوئے باغ کے قریب حاجی پیر سیکٹر کے علاقے میں سواں پترا چوکی پر حملہ کیا۔

دوسری جانب بھارتی فوج کے ایک ترجمان کرنل برجیش پانڈے نے کہا کہ ’پاکستانی افواج نے بھارتی چوکیوں پر بلا اشتعال فائرنگ کی اور مارٹر گولے پھینکے جن سے ایک سویلین مکان تباہ ہو گیا۔‘

اس حملے کے نتیجے میں دو پاکستانی فوجی زخمی ہوئے تھے جن میں سے ایک فوجی لانس نائیک اسلم بعد میں زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے ہلاک ہوگئے۔

آئی ایس پی آر کے مطابق اس کارروائی کے بعد بھارتی فوج ہتھیار چھوڑ کر پسپا ہوگئی لیکن لائن آف کنٹرول پر آخری اطلاعات آنے تک جھڑپ جاری تھی اور دونوں طرف سے فائرنگ کا تبادلہ ہو رہا تھا۔

بھارتی فوج کے کرنل پانڈے نے الزام عائد کیا کہ ’یہ ان (پاکستانی فوج) کی جانب سے شدت پسندوں کو بھارت میں داخل کرنے میں مدد دینے کی ایک کوشش ہے جس کا جواب ہم نے صرف چھوٹے ہتھیاروں سے دیا۔‘

اس سے قبل نو دسمبر دو ہزار بارہ کو بھی پاکستانی اور بھارتی افواج نے لائن آف کنٹرول کے دونوں طرف ایک دوسرے پر گولا باری کی تھی اور یہ واقعہ جنوبی ضلع راولاکوٹ کے ہجیرہ سیکٹر میں ہوا تھا۔

اس گولاباری اور فائرنگ کے نتیجے میں تین عام شہری زخمی ہوئے تھے جن میں سے ایک ہسپتال میں دم توڑ گیا۔

اسی طرح نو اگست کو پاکستانی افواج نے دراندازی کرنے والے ایک بھارتی فوجی کو ہلاک کریا تھا۔

بھارت اور پاکستان کے درمیان برسوں کی کشیدگی کے بعد نومبر سنہ دو ہزار تین میں متنازعہ کشمیر کو تقسیم کرنے والی لائن آف کنٹرول پر فائر بندی کا معاہدہ ہوا تھا جو اب تک قائم ہے۔

اس فائر بندی کے دوران اب تک لائن آف کنٹرول پر دونوں ممالک کی افواج کے درمیان گولہ باری کے تبادلے کے کئی واقعات پیش آئے ہیں تاہم فائرنگ کا تبادلہ اکثر دونوں ممالک کی افواج کی چوکیوں تک محدود رہا ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔