کراچی:جامعہ بنوریہ کے معلم سمیت تین ہلاک

آخری وقت اشاعت:  جمعرات 31 جنوری 2013 ,‭ 11:44 GMT 16:44 PST

نامعلوم افراد نے جامعۂ اسلامیہ بنوریہ کے صدر مفتی عبدالمجید کی کار پر فائرنگ کرکے انہیں اور دو اور افراد کو ہلاک کر دیا

پاکستان کے سب سے بڑے شہر کراچی میں فائرنگ کے ایک واقعے میں جامعہ اسلامیہ بنوریہ کے صدر مفتی اور ان کے نائب سمیت تین افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

پولیس حکام کے مطابق فائرنگ کا یہ واقعہ جمعرات کو شاہراہِ فیصل پر نرسری کے علاقے میں پیش آیا۔

ہمارے نمائندے کے مطابق نامعلوم حملہ آور موٹر سائیکل پر سوار تھے اور انہوں نے جامعہ علوم الاسلامیہ بنوری ٹاؤن کے صدر مفتی عبدالمجید دین پوری کی گاڑی پر فائرنگ کی۔

اس حملے میں مفتی عبدالمجید کے علاوہ ان کے نائب مفتی محمد صالح کے علاوہ جامعہ درویشیہ کے پیش امام مولانا لیاقت علی کے بیٹے حسن علی شاہ بھی مارے گئے۔

پنجاب کے علاقے خان پور سے تعلق رکھنے والے مفتی عبدالمجید دین پوری کا تعلق کراچی میں دیوبند مکتبۂ فکر سے تعلق رکھنے والے بڑے علما میں ہوتا تھا۔

وہ گذشتہ آٹھ سال جامعہ بنوریہ میں درس وتدریس کے شعبے سے منسلک تھے۔

یاد رہے کہ ماضی میں بھی مفتی نظام الدین شامزئی، محمد یوسف لدھیانوی، سعید احمد جلالپوری سمیت جامعۂ بنوریہ کے متعدد علماء ٹارگٹ کلنگ کے واقعات میں ہلاک ہو چکے ہیں۔

مفتی عبدالمجید اور ان کے ساتھی مفتی محمد صالح کی نمازِ جنازہ جمعرات کی شام بنوری ٹاؤن میں ہی ادا کی گئی ہے۔

ان ہلاکتوں کے بعد کراچی کے متعدد علاقوں میں کشیدگی پائی جاتی ہے اور ہنگامہ آرائی کی اطلاعات بھی ملی ہیں۔ تنظیم اہلِ سنت والجماعت نے ان تینوں افراد کی ہلاکت پر تین روزہ سوگ اور جمعہ کو یومِ احتجاج منانے کا اعلان کیا ہے۔

کراچی میں ٹارگٹ کلنگ کے واقعات کافی عرصے سے جاری ہیں اور اس میں سیاسی جماعتوں کے علاوہ مذہبی جماعتوں کے کارکنوں کو بھی نشانہ بنایا جاتا رہا ہے۔

انسانی حقوق کے لیے سرگرم ادارے ہیومن رائٹس کمیشن آف پاکستان کے مطابق کراچی میں گزشتہ برس دو ہزار کے قریب افراد ہلاک کیے گئے جن میں زیادہ تر افراد ایسے ہیں جنہیں لسانی، گروہی، سیاسی یا فرقہ وارانہ بنیاد پر ہدف بنا کر ہلاک کیا گیا۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔