عرب شہزادے کے قافلے پر حملہ، دو اہلکار زخمی

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 1 فروری 2013 ,‭ 17:23 GMT 22:23 PST

بلوچستان کے علاقے ضلع کیچ میں قطر کے ایک عرب شیخ کی شکار پارٹی کی حفاظت پر مامور ایف سی کے اہلکاروں پر حملے میں دو اہلکار زخمی ہوئے۔

یہ حملہ ضلع کیچ کے ہیڈ کوارٹر تربت کے قریب پٹوک کے مقام پر ہوا ۔

انتظامیہ کے مطابق قطر کے وزیر پیٹرولیم شیخ علی بن عبداللہ اپنے عملے سمیت شکار کر نے کے لیئے ضلع کیچ پہنچا ہے۔

عرب شیخ سردیوں میں سائیبریا سے بلوچستان کا رخ کرنے والے پرندے تلور کا شکار کر نے لیے آتے ہیں۔

جن عرب ممالک کے شہزادے سردیوں میں بلوچستان آتے ہیں ۔ان میں سعودی عرب، عرب امارات اور قطر کے علاوہ بعض دیگر خلیجی ممالک کے حکمران خاندانوں سے تعلق رکھنے والے شہزادے شامل ہوتے ہیں۔ جن اضلاع میں ان عرب شیوخ کو شکار کے لیے علاقے الاٹ کیئے جاتے ہیں ان میں چاغی ،خاران، کیچ،جھل مگسی، لسبیلہ، سبی اورقلعہ سیف اللہ شامل ہیں۔

قطر کے شیخ کو ضلع کیچ کے ہیڈ کوارٹر کے قریب میرانی ڈیم کے علاقے کے گردونواح میں شکار کے لیے علاقہ الاٹ کیا گیا تھا۔

جمعہ کو جب عرب شہزادہ بیس گاڑیوں پر مشتمل کے قافلے میں اپنے ایک کیمپ سے دوسرے کیمپ جا رہا تھا کہ قریبی پہاڑوں سے نامعلوم مسلح افراد نے ان کی سیکورٹی پر مامور فرنٹیئر کور کی گاڑیوں پر حملہ کیا۔

اس حملے میں فرنٹیئر کور کے دو اہلکار زخمی ہوئے۔

محکمہ داخلہ حکومت بلوچستان کے ایک اہلکار نے اس واقعہ کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ فرنٹیئر کور کی ایک گاڑی اس حملے کی زد میں آیا جس میں دو اہلکار زخمی ہوگئے۔

اہلکار نے بتایا کہ سیکورٹی فورسز کی بروقت کاروائی سے حملہ آور فرار ہوگئے۔

ان کا کہنا تھا کہ علاقے میں حملہ آوروں کا پیچھا کیا جا رہا ہے۔

کالعدم بلوچ عسکریت پسند تنظیم بلوچ لبریشن فرنٹ نے اس واقعے کی ذمہ داری قبول کی ہے۔

تنظیم کے ترجمان گہرام بلوچ نے نامعلوم مقام سے سیٹلائٹ فون پر بتایا کہ اس حملے کا ہدف عرب شیخ نہیں تھا بلکہ اس کی سیکورٹی پر مامور فرنٹیر کور کی گاڑیاں تھیں۔

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔