’بول سکتی ہوں، دوبارہ قربان ہونے کو تیار ہوں‘

آخری وقت اشاعت:  پير 4 فروری 2013 ,‭ 14:55 GMT 19:55 PST

’میں بول سکتی ہوں، میں دیکھ سکتی ہوں، میں دن بدن بہتر ہو رہی ہوں: ملالہ یوسفزئی

پاکستان کے علاقے سوات سے تعلق رکھنے والی پاکستانی طالبہ ملالہ یوسفزئی نے چار ماہ پہلے طالبان کے حملے میں زخمی ہونے کے بعد اپنے پہلے پیغام میں کہا ہے کہ وہ پاکستان میں امن اور تعلیم کے فروغ کے لیے اپنا کام جاری رکھوں گی اور اس کے لیے وہ ’دوبارہ بھی قربان ہونے کے لیے تیار ہیں۔‘

کلِک ملالہ یوسفزئی آپریشن کی حالت مستحکم

ملالہ نے یہ ویڈیو پیغام ایک ایسے کمرے میں ریکارڈ کروایا جہاں ان کے ارد گرد ہزاروں کی تعداد میں ان کی صحتیابی کی دعاؤں والے کارڈ پڑے ہوئے ہیں۔

ملالہ نے اس ویڈیو میں پہلے انگریزی، پھر اردو اور بعد میں پشتوں زبان میں اپنا پیغام دیا۔

ملالہ نے اپنے ویڈیو میں کہا کہ’میں بول سکتی ہوں، میں دیکھ سکتی ہوں، میں ہر ایک کو دیکھ سکتی ہوں۔ اور میں آج بول سکتی ہوں اور میں دن بدن بہتر ہو رہی ہوں۔ یہ صرف لوگوں کی دعاؤں کا نتیجہ ہے۔‘

انہوں نے کہا کہ سب لوگوں نے میرے لیے دعائیں کیں ہیں۔ ’ان دعاؤں کی وجہ سے خدا نے مجھے نئی زندگی دی ہے اور یہ ایک دوسری زندگی ہے اور ایک نئی زندگی ہے‘۔

ملالہ نے اردو میں بات کرتے ہوئے کہا کہ ’میں خود کو قربان کرنے کے لیے تیار ہوں دوبارہ بھی، میں یہ چاہتی ہوں کہ ہر ایک بچی تعلیم حاصل کرے اور ہر ایک بچہ تعلیم حاصل کرے اور ہمارے پورے ملک میں بلکہ پوری دنیا میں امن ہو۔ اور اس امن کے میں دوبارہ بھی خود کو قربان کروں گی‘۔

ملالہ نے اپنی اس نئی زندگی میں اپنے مقصد کے بارے میں بات کرتے ہوئے کہا کہ ’میں لوگوں کی خدمت کرنا چاہتی ہوں، میں چاہتی ہوں کہ ہر لڑکی، ہر بچہ تعلیم حاصل کرے۔ اس مقصد کے لیے ہم نے ملالہ فنڈ بنایا ہے‘۔

انہوں نے کہا ملالہ فنڈ سے لڑکیوں کی تعلیم کے لیے کوشیں کی جائیں گی اور بہترین سکول بنائے جائیں گے جن میں اعلی معیار کی تعلیم دی جائے گی۔

ملالہ جو اس وقت پندرہ سال کی ہیں سوات میں طالبان کے ایک حملے میں زخمی ہونے کے بعد اس وقت برطانیہ کے شہر برمنگھم میں مقیم ہیں جہاں ان کا علاج ہو رہا ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔