لاہور میں نوجوان ڈاکٹروں پر پولیس کا تشدد

آخری وقت اشاعت:  پير 11 فروری 2013 ,‭ 22:50 GMT 03:50 PST

نوجوان ڈاکٹروں نے ایک ہفتے سے سروسز ہسپتال کے باہر بھوک ہڑتالی کیمپ لگا رکھا تھا

پاکستان کے شہر لاہور میں پولیس نے نوجوان ڈاکٹروں کی جانب سے سروس سٹرکچر پر عمل درآمد کروانے کے لیے میٹرو بس کے راستے کے قریب اجتجاج کرنے کی کوشش ناکام بنا دی اور ڈاکٹروں کے بھوک ہڑتالی کیمپ کو بھی اکھاڑ دیا۔

پولیس نے ڈاکٹروں کے ساتھ اظہارِ یک جہتی کرنے والے پیپلز پارٹی کے پنجاب اسمبلی میں ڈپٹی پارلیمانی لیڈر شوکت بسرا کو بھی تشدد کا نشانہ بنایا۔

پولیس نے کئی ڈاکٹروں کو حراست میں لے لیا تاہم بعد میں انہیں رہا کردیا گیا۔

نوجوان ڈاکٹروں نے ایک ہفتے سے سروسز ہسپتال کے باہر بھوک ہڑتالی کیمپ لگا رکھا تھا اور نوجوان ڈاکٹروں کی تنظیم نے یہ فیصلہ کیا تھا کہ اتوار کو میٹرو بس کے افتتاح پر اس کے روٹ کے قریب احتجاج کیا جائے گا۔

ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کے ارکان نے جب اپنے مطالبات منوانے کے لیے میٹرو بس کے روٹ پر جانے کے لیے سروسز ہسپتال سے مارچ شروع کیا تو پولیس نے انہیں روکنے کی کوشش کی۔

پولیس کی جانب سے ڈاکٹروں کو روکنے پر ڈاکٹروں اور پولیس کے درمیان ہاتھا پائی ہوگئی۔ پولیس نے ڈاکٹروں پر لاٹھی چارج کیا اور جواب میں ڈاکٹروں نے پولیس پر پتھراؤ کیا۔

پولیس نے کئی ڈاکٹروں کو حراست میں لے کر ان کے بھوک ہڑتالی کمیپ کو اکھاڑ پھینکا۔

پولیس نے نوجوان ڈاکٹروں کے ساتھ اظہارِ یک جہتی کے لیے آنے والے پنجاب اسمبلی میں پاکستان پیپلز پارٹی کے ڈپٹی پارلیمانی لیڈر شوکت بسرا کو اس وقت تشدد کا نشانہ بنایا جب شوکت بسراء کی علاقے کے ایس پی سے تلخ کلامی ہوئی۔

تشدد کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے شوکت بسراء نے بتایا کہ وہ اپنے والد کے علاج کے لیے ہسپتال آئے تھے اور جب انہوں نے پولیس کو ڈاکٹروں پر لاٹھی چارج کرتے دیکھا تو انہوں نے پولیس کو ایسا کرنے سے روکا جس پر پولیس نے انہیں بھی تشدد کا نشانہ بنایا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ شوکت بسر اء نے غیر مہذب زبان کا استعمال کیا جس کے بعد ان کو روکا گیا۔

شوکت بسر اء نے اعلان کیا کہ ڈاکٹروں پر ہونے والے تشدد پر پنجاب اسمبلی کے اندر احتجاج کیا جائے گا۔

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔