’ایک ووٹ بھی ضائع نہیں ہونے دیں گے‘

آخری وقت اشاعت:  ہفتہ 23 فروری 2013 ,‭ 17:21 GMT 22:21 PST

’آئندہ عام انتخابات میں امیدواروں پر تعلیمی سند کی کوئی شرط عائد نہیں ہوگی‘

پاکستان کے الیکشن کمیشن کا کہنا ہے آئندہ انتخابات حقیقی مقبول قیادت کے لیے ‘سرپرائز’ ہوگا کیونکہ ہم کسی کا ایک ووٹ بھی ضائع نہیں ہونے دیں گے۔

یہ بات الیکشن کمیشن کے ایڈیشنل سیکریٹری محمد افضل خان نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے کی۔

انھوں نے کہا کہ ایسے سیاست دان جو ماضی میں دھاندلی کے ذریعے جیتتے رہے ہیں، ان کے لیے ڈراؤنا خواب ہوگا۔

انھوں نے بتایا کہ آئندہ عام انتخابات میں امیدواروں پر تعلیمی سند کی کوئی شرط عائد نہیں ہوگی لیکن ٹیکس یا قرض نا دہندگان کی سخت چیکنگ ہوگی۔

ان کے مطابق موجودہ پارلیمان اور صوبائی اسمبلیوں کے اراکین پر سپریم کورٹ کے سنہ 2010 میں جاری کردہ حکم کے تحت لازم ہے کہ وہ اپنی اسناد ہائر ایجوکیشن سے تصدیق کروائیں۔

انہوں نے پارلیمان کی جانب سے تعلیمی اسناد کی تصدیق کے معاملے پر کمیٹی بنانے کا خیرمقدم کیا اور کہا کہ کمیٹی ان کے تمام تحفظات دور کرے گی تاکہ قانونی تقاضا پورا کیا جا سکے۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے بتایا کہ تاحال حکومت نے آئندہ انتخابات کے بارے میں کسی تاریخ سے مطلع نہیں کیا۔

"ہم نے اس ملک کو ایک ایسا انتخاب دینا ہے جس کو دوست اور دشمن سب کہیں کہ یہ ایک بہترین، شفاف، صاف، آزاد اور غیرجانبدارانہ الیکشن تھا۔"

الیکشن کمیشن کے ایڈیشنل سیکریٹری محمد افضل خان

لیکن ان کے بقول اگر اسمبلی مدت مکمل کرتی ہے تو 60 روز میں اور اگر ایک روز بھی پہلے توڑی گئی تو 90 روز میں الیکشن ہوں گے اور دونوں صورتوں میں انتخابات منعقد کرنے کے لیے کمیشن نے اپنی تیاری کر رکھی ہے۔

’ہم نے شیڈول بنا رکھا ہے اور اب دیکھنا یہ ہے کہ اگر امیدواروں کے کاغذات کی جانچ پڑتال کے لیے اگر مدت سات روز سے 14 روز تک بڑھائی گئی تو اس اعتبار سے رد و بدل کر کے اُسے جاری کریں گے۔‘

انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن ساڑھے آٹھ کروڑ ووٹروں کو پرامن ماحول اور شفاف انداز میں ووٹ ڈالنے کے لیے ہر ممکنہ انتظام کرے گا کیونکہ یہ انتخابات ماضی سے کافی مختلف ہوں گے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ’ہم نے اس ملک کو ایک ایسا انتخاب دینا ہے جس کو دوست اور دشمن سب کہیں کہ یہ ایک بہترین، شفاف، صاف، آزاد اور غیرجانبدارانہ الیکشن تھا۔‘

انہوں نے بتایا کہ آئندہ انتخابات میں امیدواروں کی قانون کے مطابق سخت چھان بین ہوگی۔

ان کے بقول ٹیکس اور نادہندگاں کے کوائف کی تصدیق سٹیٹ بینک اور فیڈرل بورڈ آف ریوینیو سے کرائی جائے گی۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔