نگران وزیراعظم کیلیے حزب اختلاف سے نام طلب

آخری وقت اشاعت:  بدھ 27 فروری 2013 ,‭ 17:54 GMT 22:54 PST
راجہ پرویز اشرف

وزیر اعظم نے قائد حزب اختلاف سے عبوری وزیر اعظم کے لیے ان کو منظور نام مانگے ہیں

پاکستان کے وزیراعظم راجہ پرویز اشرف نے قائد حزبِ اختلاف چوہدری نثارسے کہا ہے کہ وہ قومی اسمبلی کی تحلیل سے قبل نگران وزیراعظم کے لیے اپوزیشن کی جانب سے نام تجویز کر دیں۔

انہوں نے یہ بات چوہدری نثار کو بھیجےگئے ایک خط میں کہی ہے۔

پاکستان کے سرکاری خبر رساں ادارے اے پی پی کے مطابق وزیراعظم راجہ پرویز اشرف نے خط میں کہا ہے کہ اگر چوہدری نثار کی جماعت (مسلم لیگ نواز) نگران وزیراعظم کے لیے انہیں منظور شخصیات کے ناموں کی فہرست اسمبلی کی تحلیل سے پہلے نہیں دیتی تو پھر انہیں آئین کے تحت اس سلسلے میں کارروائی کرنی ہوگی۔

وزیراعظم راجہ پرویز اشرف نے لکھا ہے کہ ’یہ بہت ضروری ہے کہ ہم آئین کے مطابق یہ سلسلہ شروع کریں اور عبوری وزیر اعظم کی تقرری کے لیے کسی ایسے نام پر متفق ہوں جو قومی مفاد کو پیش نظر رکھتے ہوئے آزادانہ، منصفانہ اور شفاف انتخابات کرا سکے۔‘

وزیراعظم کے مطابق ’پاکستانی عوام کو ہم سے یہ توقع ہے کہ ہم کسی مناسب شخص کا انتخاب کریں گے۔‘

چوہدری نثار علی خان کو لکھے گئے اس خط میں وزیر اعظم نے آئین کی شق 224۔اے کا حوالہ بھی دیا ہے۔

اس شِق کے تحت ’اگر قومی اسمبلی کی تحلیل کے تین روز کے اندر وزیراعظم اور قائد حزب اختلاف میں عبوری وزیر اعظم کے نام پر اتفاق نہیں ہوتا تو پھر دونوں کی طرف سے دو دو نام ایک کمیٹی کو بھیجے جائیں گے۔ یہ کمیٹی آٹھ ارکان قومی اسمبلی یا سینیٹ (یا دونوں) پر مشتمل ہوگی اور ان میں حکومت اور حزب مخالف کے نمائندوں کی تعداد برابر ہوگی اور اس کمیٹی کے ارکان کو وزیراعظم اور قائد حزب اختلاف نامزد کریں گے۔‘

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔