بادامی باغ آتشزدگی پر حکومتی رپورٹ مسترد

آخری وقت اشاعت:  بدھ 13 مارچ 2013 ,‭ 07:46 GMT 12:46 PST

پولیس نے اس سلسلے میں چالیس سے زائد افراد کو حراست میں لیا ہے

سپریم کورٹ نے لاہور کے علاقے بادامی باغ میں میسحی بستی کو آگ لگائے جانے کے واقعے پر پنجاب کے آئی جی اور سی سی پی او کو ذمہ دار ٹھہراتے ہوئے مکمل اور جامع تحقیقات کا حکم دیا ہے۔

آتشزدگی کا یہ واقعہ گزشتہ سنیچر کو اس وقت پیش آیا تھا جب ایک مشتعل ہجوم نے جوزف کالونی کے رہائشی پر توہینِ رسالت کا الزام عائد کیے جانے کے بعد بستی پر دھاوا بول دیا تھا۔

جوزف کالونی غریب عیسائیوں کی بستی ہے اور یہاں زیادہ تر خاکروب مقیم تھے۔

مشتعل ہجوم نے متاثرہ علاقے میں واقع 180 مکانات اور ان میں موجود املاک کو آگ لگا کر مکمل طور پر تباہ کر دیا تھا جبکہ دو گرجا گھروں کو بھی جلایا گیا تھا۔

پاکستان کی سپریم کورٹ کے چیف جسٹس نے اس معاملے کا ازخود نوٹس لیا تھا۔

بدھ کو نوٹس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس افتخارمحمد چوہدری نے اس واقعے پر پیش کی گئی رپورٹ مسترد کرتے ہوئے اپنے مختصر حکم میں پنجاب حکومت سے کہا ہے کہ وہ جامع رپورٹ پیش کرے۔

ریڈیو پاکستان کے مطابق انہوں نے کہا کہ پنجاب حکومت اور پولیس کی طرف سے پیش کی گئی رپورٹوں میں تضاد ہے اور ایسا لگتا ہے کہ حقائق بیان نہیں کیے گئے۔

فیصلے میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ علاقے کے ایس ایچ او اور ڈی ایس پی کو معطل کرنا کافی نہیں اور آئی جی اور سی سی پی او سانحۂ بادامی باغ کے ذمہ دار ہیں۔

خیال رہے کہ اب تک پولیس نے اس سلسلے میں چالیس سے زائد افراد کو حراست میں لیا ہے جن میں سے چودہ کو عدالت نے جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کرنے کا حکم دیا تھا۔

حکومتِ پنجاب نے اس واقعے کے بعد متاثرین کو دو، دو لاکھ روپے امداد دینے کے علاوہ ان کے لیے علاقے میں ایک کیمپ قائم کیا لیکن ناکافی سہولیات کے وجہ سے اس میں چند لوگ ہی رکے تھے اور زیادہ تر نے شہر میں اپنے عزیز و اقارب کے ہاں ٹھہرنے کو ترجیح دی تھی۔

اس مقدمے کی سماعت آئندہ پیر تک ملتوی کر دی گئی ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔