نئے ہائی کورٹ بینچ بنانے کا فیصلہ مسترد

آخری وقت اشاعت:  جمعرات 14 مارچ 2013 ,‭ 14:51 GMT 19:51 PST

لاہور ہائی کورٹ بار ایسوسی ایشن نے پنجاب میں ہائی کورٹ کے پانچ نئے بینچ قائم کرنے کےحکومتی فیصلے کو مسترد کرتے ہوئے اسے واپس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔

یہ مطالبہ لاہور ہائی کورٹ بار کے اجلاس میں جمعرات کو ہائی کورٹ کے نئے بینچ بنانے کے خلاف قرار داد منظور کرتے ہوئے کیا گیا۔

پنجاب حکومت نے دو روز قبل صوبائی کابینہ کے اجلاس میں لاہور ہائی کورٹ کے فیصل آباد، سرگودھا، ساہیوال، گوجرانوالہ اور ڈیرہ غازی خان میں نئے بینچ قائم کا اعلان کیا تھا۔

لاہور ہائی کورٹ بار کے اجلاس میں ہائی کورٹ کے نئے بینچ قائم کرنے کے فیصلے کو سیاسی شوشہ قرار دیا گیا۔

پنجاب حکومت نے پانچ شہروں میں لاہور ہائی کورٹ کے نئے بینچ بنانے کا فیصلہ ایک ایسے وقت میں کیا جب فیصل آباد اور سرگودھا کے وکلا اپنے اپنے شہر میں لاہور ہائی کورٹ کے بینچ کے قیام کے لیے احتجاج کر رہے تھے۔

ہائی کورٹ بار ایسوسی ایشن کے اجلاس میں ایک قرارداد کے ذریعے پنجاب حکومت سے مطالبہ کیا کہ لاہور ہائی کورٹ کے پانچ نئے بینچ کی تشکیل کے لیے گورنر پنجاب کو بھجوائی گئی تجاویز فوری طور پر واپس لی جائیں۔

ہائی کورٹ بار نے قرار داد کے ذریعے فیصل آباد، سرگودھا، ساہیوال، گوجرانوالہ اور ڈیرہ غازی خان کے وکلا سے اپیل کی کہ وہ اپنے شہروں میں ہائی کورٹ کے بینچ کے قیام کے لیے ہڑتال ختم کریں اور اجلاس میں اپنی ترجیحات بیان کریں۔

اجلاس میں یہ فیصلہ کیا گیا کہ سابق فوجی صدر جنرل ضیاء الحق کے دور میں راولپنڈی، ملتان اور بہاولپور میں قائم کیے جانے والے تین بینچوں کے خاتمہ کے لیے نظرثانی کی درخواست دائر کی جائے۔

خیال رہے کہ سابق فوجی صدر جنرل ضیاء الحق کے دور میں لاہور ہائی کورٹ کے راولپنڈی، ملتان اور بہاولپور میں بینچ قائم کیے گئے تھے اور ان بینچوں کی تشکیل کے خلاف لاہور ہائی کورٹ میں ایک آئینی درخواست بھی لگ بھگ تین دہائیوں سے لاہور ہائی کورٹ کے فل بینچ کے روبرو زیر سماعت رہی۔

یہ درخواست معروف قانون ایم ڈی طاہر ایڈووکیٹ نے دائر کی تھی اور ان کے انتقال کے بعد اس درخواست کی سماعت ہوئی اور ہائی کورٹ کے فل بینچ نے یہ درخواست خارج کر دی تھی۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔