بلوچستان: مختلف واقعات میں نو افراد ہلاک اور چوبیس زخمی

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 22 مارچ 2013 ,‭ 09:41 GMT 14:41 PST

فائرنگ کے بعد حملہ آور فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے

بلوچستان میں جمعہ کو بم دھماکے اور تشدد کے دیگر واقعات میں کم ازکم 9 افراد ہلاک اور 24 زخمی ہو گئے ہیں۔

ہلاک ہونے والوں میں ایک نجی سولر یا شمسی توانائی پیدا کرنے والی کمپنی کے چار کارکن بھی شامل ہیں جن کو قلات میں فائرنگ کرکے ہلاک کیا گیا ہے۔

دریں اثناء بلوچستان کے سندھ سے متصل ڈیرہ اللہ یار کے علاقے میں بم دھماکہ ہوا۔

مقامی پولیس کے ایس ایچ او بشیر احمد نے بی بی سی کو بتایا کہ نامعلوم افراد نے ایک چینک چی موٹر سائیکل میں دھماکہ خیز مواد نصب کرکے اسے ڈیرہ اللہ یار میں سندھ بلوچستان کے قومی شاہراہ پر کھڑا کیا تھا۔

دھماکہ خیز مواد پھٹنے سے کم از کم 5 افراد ہلاک اور 22 زخمی ہوگئے اور بم دھماکے کے باعث جائے وقوعہ پر6 فٹ کا گڑھا بن گیا۔

مقامی ہسپتال میں ابتدائی طبی امداد کے بعد شدید زخمیوں کو علاج کے لیے لاڑکانہ اور سندھ کے دیگر علاقوں میں منتقل کر دیا گیا۔ تاہم اس واقعے میں ہلاکتیں بڑھنے کا خدشہ بھی ظاہر کیا جا رہا ہے۔

ادھر بلوچستان کے ضلع قلات میں نامعلوم مسلح افراد کے حملے میں ایک نجی سولر کمپنی کے چار اہلکار ہلاک اور دو زخمی ہو گئے ہیں۔

انتظامیہ کے ایک اہلکار نے بتایا کہ قلات میں شمسی توانائی کے ایک منصوبے پر کام کرنے والے ایک کمپنی کے چار کارکن مغلزئی کے علاقے میں اپنی گاڑی میں منی پیٹرول پمپ پر تیل ڈال رہے تھے کہ وہاں نامعلوم موٹر سائیکل سوار نے ان پر اندھا دھند فائرنگ کی۔ جس کے نتیجے میں چار افراد ہلاک اور دو زخمی ہوگئے۔

فائرنگ کے بعد حملہ آور فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے۔

ہلاک ہونے والے چاروں افراد کا تعلق پنجاب اور سندھ سے بتایا جاتا ہے۔

ایک اور واقعے میں سبی اور ڈیرہ مراد جمالی کے درمیان نامعلوم افراد نے 132 کے وی کے ٹرانسمیشن لائن کے ایک ٹاور کو نوتال کے مقام پر دھماکہ خیز مواد سے اڑا دیا۔

جبکہ سبی رکھنی روڈ پر کام کرنے والی ایک کمپنی کی مشنری کو نامعلوم مسلح افراد نے حملہ کرکے تباہ کرنے کے بعد کمپنی کے دو اہلکاروں کو اغوا کرکے لے گئے ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔