سابق صدر مشرف کی تین مقدمات میں ضمانتیں منظور

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 22 مارچ 2013 ,‭ 11:48 GMT 16:48 PST

جنرل مشرف نے تین نومبر 2007 کو ملک میں ایمرجنسی کا نفاذ کردیا تھا، جس میں تمام ججز کو معزول کرنے کے بعد گھروں میں حبس بے جاں کردیا گیا تھا

پاکستان کی سندھ ہائی کورٹ نے سابق فوجی صدر جنرل پرویز مشرف کی تین مقدمات میں حفاظتی ضمانتیں منظور کرلی ہیں۔

عدالت نے حکم دیا ہے کہ ان مقدمات میں ایک ایک لاکھ کے مچلکے جمع کرائے جائیں۔

جنرل پرویز مشرف کی صاحبزادی ڈاکٹر عائلہ رضا نے سندھ ہائی کورٹ میں حفاظتی ضمانت کی درخواست دائر کی تھی۔ ان کے وکیل نے موقف اختیار کیا تھا کہ وہ وطن واپس آکر اپنا دفاع کرنا چاہتے ہیں۔

سندھ ہائی کورٹ کے چیف جسٹس مشیر عالم نے ججز کیس میں جنرل پرویز مشرف کی دس روز کے لیے ضمانت منظور کی۔

جنرل پرویز مشرف پر سابق وزیر اعظم اور بینظیر بھٹو کو مطلوبہ حفاظت فراہم نہ کرنے، بلوچستان کے قوم پرست رہنما نواب اکبر بگٹی کے قتل کی سازش کرنے اور چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری سمیت ساٹھ ججز کو حبس بے جاں میں رکھنے کا الزام ہے۔

یاد رہے کہ جنرل مشرف نے تین نومبر 2007 کو ملک میں ایمرجنسی کا نفاذ کردیا تھا، جس میں تمام ججز کو معزول کرنے کے بعد گھروں میں حبس بے جاں میں رکھا گیا۔

جسٹس سجاد علی شاھ اور جسٹس نعمت اللہ پھلپوٹو نے بینظیر بھٹو اور نواب اکبر بگٹی کیس میں ان کی دو ہفتوں کے لیے ضمانت منظور کی۔

یاد رہے کہ صدارت سے سبکدوش ہونے کے بعد جنرل مشرف بیرون ملک چلے گئے تھے اور اتوار کو انہوں نے وطن واپس آنے کا اعلان کیا ہے۔

اس سے پہلے بھی جنرل مشرف واپسی کے اعلان کرچکے ہیں تاہم ان کی جماعت کو یقین ہے کہ اس بار وہ وطن واپس آئیں گے اور محمد علی جناح کے مزار کے قریب جلسہ عام سے خطاب کریں گے۔

بینظیر بھٹو قتل کیس میں حکومت نے جنرل مشرف کی گرفتاری کے لیے انٹرپول سے بھی رجوع کیا تھا لیکن اسے کامیابی حاصل نہیں ہوسکی تھی۔

جنرل پرویز مشرف نے آئندہ انتخابات میں اپنی جماعت آل پاکستان مسلم لیگ کے زیر انتظام حصہ لینے کا اعلان کیا ہے، وہ خود کراچی اور چترال سے امیدوار ہوں گے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔