عمران کے کاغذاتِ نامزدگی منظور، شہباز کا فیصلہ کل

Image caption عمران خان پر اعتراض تھا کہ ان کے غیر ملکی خاتون سیتا وائٹ سے تعلقات رہے ہیں

پاکستان میں کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال کا سلسلہ جاری ہے اور تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان کے کاغذات منظور ہوگئے ہیں۔

ریٹرننگ آفیسر نے سابق وزیرِاعلیٰ پنجاب شہباز شریف کے کاغذات نامزدگی پر اعتراضات کا فیصلہ اتوار کو ہوگا۔

تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان لاہور سے قومی اسمبلی کے حلقہ 122 سے امیدوار ہیں اور ان کے کاغذات نامزدگی پر ان کے حلقے کے ایک ووٹر نے اعتراضات اٹھائے ہیں۔

جمعے کو ریٹرننگ آفیسر نے کاغذاتِ نامزدگی پر اعتراضات کی درخواست پر عمران خان کو نوٹس جاری کیے تھے۔

سنیچر کو عمران خان کی جانب سے حامد خان ایڈووکیٹ ریٹرننگ آفیسر کے سامنے پیش ہوئے اور اعتراضات کو بے بنیاد اور مخالفین کی جانب سے کیچڑ اچھالنے کی سازش قرار دیا۔

شکایت کنندہ محمد اسلم کے وکیل جواد اشرف کا کہنا ہے کہ عمران خان کے ایک غیر ملکی خاتون سیتا وائٹ سے تعلقات رہے ہیں اور اس خاتون سے ان کی ایک بیٹی بھی ہیں۔

وکیل کے بقول آئین کے آرٹیکل 62 اور 63 کے تحت عمران خان صادق اور امین نہیں رہے ہیں۔

اس کے علاوہ عمران خان پر اعتراض کیا گیا کہ ان کی سابق اہلیہ جمائمہ اب مسلمان نہیں رہی ہیں اور عمران خان کے دونوں بیٹوں کی پرورش کر رہی ہیں۔

خیال رہے کہ عمران خان کی گرل فرینڈ سیتا وائٹ نے دعویٰ کیا تھا ان کی بیٹی ٹائرین وائٹ عمران خان کی اولاد ہیں۔ سیتا وائٹ 2005 میں انتقال کر گئی تھیں۔

پنجاب کے صوبائی دارالحکومت لاہور میں امیدواروں کے کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال کے سلسلے میں ماتحت عدالتوں میں خاصی گہما گہمی رہی اور سیاسی جماعتوں کے رہنما اپنے کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال کے لیے ریٹرننگ آفیسروں کے پاس پیش ہوئے۔

ریٹرننگ آفیسر نے سابق وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف کے کاغذات نامزدگی پر اعتراضات پر کارروائی مکمل کرلی۔

شہباز شریف لاہور سے قومی اور صوبائی اسمبلی کے حلقوں سے امیدوار ہیں جب کہ ان کاغذات نامزدگی پر ایک سے زیادہ لوگوں نے اعتراضات داخل کروائے ہیں۔

ریٹرننگ آفیسر کے مطابق شہباز شریف کے کاغذات نامزدگی پر اعتراضات پر فیصلہ کا اعلان سات اپریل یعنی اتوار کو کیا جائے گا۔

شہباز شریف کے بیٹے حمزہ شہباز کے کاغذات نامزدگی منظور یا مسترد ہونے کا فیصلہ بھی سات اپریل کو ہوگا۔ حمزہ شہباز بھی اپنے والد کی طرح قومی اور صوبائی اسمبلی کی نشستوں پر امیدوار ہیں۔

حمزہ شہباز کی بیوی ہونے کی دعوے دار عائشہ ملک بھی اس حلقے سے امیدوار ہیں جہاں سے حمزہ شہباز انتخاب لڑ رہے ہیں۔ عائشہ ملک کے کاغذات نامزدگی کو ایک مقامی شہری نے چیلنج کر رکھا ہے۔

پاکستان کی سابقِ وزیر خارجہ حنا ربانی کھر کے کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال اتوار کو جاری رہے گی۔ حنا ربانی کھر منظر گڑھ سے قومی اسمبلی کی امیدوار ہیں اور ان پر یہ اعتراض کیا گیا کہ وہ نادہندہ ہیں۔

دوسری طرف جماعتِ اسلامی نے سابق فوجی صدر جنرل پرویز شرف کے کاغذات نامزدگی کو چیلنج کر دیا ہے۔

ریٹرننگ آفیسر نے جنرل ریٹائرڈ پرویز مشرف کے کاغذات پر اعتراضات پر انھیں نوٹس جاری کردیے ہیں۔

جنرل ریٹائرڈ پرویز مشرف کراچی سے قومی اسمبلی حلقہ 250 سے امیدوار ہیں اور جماعتِ اسلامی کے سابق ضلعی ناظم نعمت اللہ خان نے ان کے کاغذات نامزدگی کو چیلنج کیا ہے۔

نعمت اللہ خان کے مطابق سابق فوجی صدر نے دو بار آئین توڑا ہے اس لیے وہ انتخابات میں حصہ لینے کے اہل نہیں ہیں۔

گذشتہ روز پنجاب کے علاقہ قصور کے ریٹر نننگ آفیسر نے جنرل پرویز مشرف کے کاغذات نامزدگی مسترد کرتے ہوئے انہیں انتخابات میں حصہ لینے کے لیے نااہل قرار دیا تھا۔

اسی بارے میں