کُل 27204 کاغذات نامزدگی داخل، اپیلوں کا مرحلہ جاری

پاکستان کے الیکشن کمیشن کے مطابق آئندہ انتخابات میں قومی اور صوبائی اسمبلیوں کی 849 نشستوں کے لیے ستائیس ہزار دو سو چار کاغذات نامزدگی داخل کرائے گئے ہیں۔

واضح رہے کہ پیر کو الیکشن کمیشن نے اعلان کیا تھا کہ ملک بھر سے قومی اسمبلی اور صوبائی اسمبلی کی عام نشستوں کیلئے 24094 کاغذات نامزدگی موصول ہوئے تھے۔

الیکشن کمیشن کی جانب سے شائع کردہ اعداد و شمار کے مطابق قومی اسمبلی کی 272 نشستوں کے لیے آٹھ ہزار بہّتر کاغذات نامزدگی داخل کرائے گئے۔

قومی اسمبلی میں اسلام آباد کی دو نشستوں کے لیے 148 نامزدگیاں داخل کرائی گئیں جبکہ وفاق کے زیر انتظام قبائلی علاقوں کی بارہ نشستوں کے لیے 451 امیدواروں نے کاغذات جمع کرائے۔

صوبائی اسمبلیوں کی کُل پانچ سو ستتر نشستوں کے لیے انیس ہزار ایک سو بتیس کاغذات نامزدگی جمع کرائے گئے۔

الیکشن کمیشن نے خواتین اور اقلیتوں کی مخصوص نشستوں کے حوالے سے بھی اعداد و شمار جاری کیے ہیں۔

کمیشن کے مطابق قومی اسمبلی میں خواتین کی ساٹھ مخصوص نشستوں کے لیے 488 نامزدگیاں آئی ہیں۔

اسی طرح صوبائی اسمبلیوں میں خواتین کی 128 مخصوص نشستوں کے لیے 1230 نامزدگیاں موصول ہوئیں۔

کمیشن نے قومی اور صوبائی اسمبلیوں میں اقلیتوں کے لیے مخصوص نشستوں کے اعداد و شمار بھی جاری کیے ہیں۔ قومی اسمبلی میں اقلیتوں کی دس مخصوص نشستیں ہیں جن پر 182 نامزدگیاں موصول ہوئی ہیں۔ دوسری جانب صوبائی اسمبلیوں میں 23 نشستیں ہیں جن پر 453 نامزدگیاں موصول ہوئی ہیں۔

کاغذات نامزدگی کو رد یا قبول کرنے بارے میں الیکشن کمیشن کے ریٹرننگ افسران کے فیصلوں کے خلاف اپیل دائر کرنے کی حتمی تاریخ دس اپریل مقرر کی گئی ہے۔

انتخابی ٹربیونل 17 اپریل تک ان اپیلوں پر فیصلہ کرے گا جبکہ امیدواروں کو 18 اپریل تک اپنے کاغذات نامزدگی واپس لینے کی اجازت ہو گی۔

اس سلسلے میں الیکشن کمیشن نے صوبہ پنجاب کے لیے پانچ ، صوبہ سندھ کے لیے دو اور خیبر پختونخوا اور بلوچستان کے لیے ایک ایک ٹریبونل کے قیام کا اعلان کیا ہے۔

مکمل چھان بین کے بعد الیکشن کمیشن 19 اپریل کو انتخابی امیدواروں کی حتمی نظر ثانی شدہ فہرست شائع کرے گا جس پر11 مئی کو انتخابات کا انعقاد ہوگا۔

اسی بارے میں