شمالی وزیرستان میں ڈرون حملہ 3 غیر ملکی ہلاک

Image caption مقامی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ ڈرون سے دو میزائل فائر کیے گئے جس سے مکان کا ایک کمرہ مکمل تباہ ہو گیا

پاکستان میں وفاق کے زیر انتظام قبائلی علاقے شمالی وزیر ستان میں ایک ڈرون حملے کے نتیجے میں تین غیر ملکی ہلاک ہو گئے۔

یہ ڈرون حملہ پاکستان افغانستان سرحد کے قریب دتہ خیل کے علاقے منظر خیل میں ایک مکان پر ہوا جس کے نتیجے میں مکان کا ایک کمرہ تباہ ہو گیا۔

مقامی انتظامیہ کے مطابق شمالی وزیرستان میں میران شاہ کے علاقے میں اس مکان میں یہ غیر ملکی گزشتہ کافی عرصے سے رہائش پذیر تھے۔

میران شاہ سے پینتیس کلومیٹر دور دتہ خیل کا علاقہ واقع ہے جو کہ افغان سرحد کے بہت قریب واقع ہے۔

مقامی حکام کے مطابق اس مکان میں میں ان غیر ملکیوں کے علاوہ حافظ گُل بہادر گروپ اور حقانی گروپ کے ارکان بھی آتے جاتے تھے۔

مقامی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ ڈرون سے دو میزائل فائر کیے گئے جس سے مکان کا ایک کمرہ مکمل تباہ ہو گیا۔

یاد رہے کہ تین مارچ کو جنوبی وزیرستان کے سراکنڈہ کے علاقے میں ایک ڈرون حملے میں پاکستانی طالبان کے کمانڈر ملا نذیر ہلاک ہوگئے تھے۔

اسی طرح سالِ رواں کے دوران نو کے قریب ڈرون حملے ہو چکے ہیں جبکہ اس قبل آخری ڈرون حملہ بائیس مارچ کو ہوا تھا۔

نگراں حکومت کے دور میں ہونے والا یہ پہلا ڈرون حملہ ہے۔

اسی بارے میں