کیچ:انتخابی اجلاس پر کریکر سے حملہ

Image caption بلوچستان میں انتخابی مہم چلانے والی جماعتوں کو نشانہ بنائے جانے کا یہ تیسرا واقعہ ہے

بلوچستان کے علاقے ضلع کیچ میں قوم پرست جماعت نیشنل پارٹی کے سربراہ ڈاکٹر عبدالمالک کی رہائش گاہ پر کریکر پھینکا گیا ہے تاہم اس حملے میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا ہے۔

یہ حملہ اتوار کو اس وقت ہوا جب ان کی رہائش گاہ پر آئندہ عام انتخابات کے حوالے سے ایک اجتماع ہو رہا تھا۔

کیچ کے ہیڈکوارٹر تربت کے ایک پولیس اہلکار نے بی بی سی کو بتایا کہ نامعلوم افراد کی جانب سے پھینکا جانے والا دھماکا خیز مواد مکان کے اندر نہیں گرا بلکہ داخلی دروازے کے ساتھ گر کر زودردار دھماکے سے پھٹ گیا۔

اہلکار کے مطابق جب یہ حملہ ہوا تو ڈاکٹر عبد المالک خود بھی وہاں موجود تھے۔

انہوں نے کہا کہ اس حملے میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا اور حملہ آور فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے۔

خیال رہے کہ بلوچستان میں انتخابی مہم چلانے والی جماعتوں کو نشانہ بنائے جانے کا یہ تیسرا واقعہ ہے۔

دو روز قبل کوئٹہ شہر کے علاقے سریاب میں ایک اور بلوچ قوم پرست جماعت بلوچستان نیشنل پارٹی (مینگل) کے ایک انتخابی دفتر پر دستی بم سے حملہ ہوا تھا۔

اس سے پہلے 16 اپریل کو ضلع خضدار کے علاقے زہری میں انتخابی مہم کے سلسلے میں جانے والے مسلم لیگ (ن) کے صوبائی صدر نواب ثناء اللہ زہری کے قافلے پر ریموٹ کنٹرول بم حملے میں ان کے بیٹے ،بھائی اور بھتیجے سمیت پانچ افراد ہلاک ہوئے تھے۔

علاوہ ازیں انتخابی شیڈول کے اعلان کے بعد بلوچستان کے شورش زدہ علاقوں میں الیکشن کمیشن کے دفاتر اور نادرا کے دفاتر پر بھی حملے ہوئے ہیں۔

اسی بارے میں