’سکیورٹی منصوبے کو حتمی شکل دے دی گئی‘

پاکستان کی بّری فوج کے سربراہ جنرل اشفاق پرویز کیانی کی سربراہی میں کور کمانڈرز کے خصوصی اجلاس میں آئندہ انتخابات میں سکیورٹی کے منصوبے کو حتمی شکل دی گئی۔

پاکستانی فوج کے شعبہ عامہ آئی ایس پی آر کی جانب سے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ کور کمانڈرز کے اس خصوصی اجلاس میں آئندہ انتخابات کے موقع پر سکیورٹی کے منصوبے پر غور کیاگیا۔

اجلاس میں الیکشن کمیشن، وفاقی اور صوبائی حکومتوں کے ساتھ ہونے والے مذاکرات کی روشنی میں فوج کی تعیناتی سے متعلق تمام اُمور پر تبادلہ خیال کیاگیا اور تعیناتی کے منصوبے کو حتمی شکل دی گئی۔

یاد رہے کہ پاکستان کے الیکشن کمیشن نے وفاقی اور چاروں صوبائی حکومتوں سے گیارہ مئی کو ہونے والے عام انتخابات کے دوران امن و امان کو یقینی بنانے کے لیے پولیس اور رینجرز کے علاوہ فوج کی تعیناتی کی سفارش کی تھی۔

کمیشن نے وفاقی اور صوبائی حکومتوں سے کہا تھا کہ وہ ملک بھر میں انتخابات میں حصہ لینے والے امیدواروں کے علاوہ عام لوگوں کی جان و مال کی حفاظت کے لیے انتظام کریں اور اس مقصد کے لیے پولیس اور رینجرز کے علاوہ فوج کی خدمات بھی حاصل کی جائیں۔

خیال رہے کہ الیکشن کمیشن پہلے بھی انتخابات کے دوران فوج تعینات کرنے کی سفارش کر چکا ہے لیکن نگراں حکومت اس بارے میں فیصلہ کرنے میں بظاہر محتاط نظر آتی ہے اور خود فوج کی جانب سے بھی ہر پولنگ مرکز پر فوجی اہلکاروں کی تعیناتی کی مخالفت کی گئی ہے۔

اسی بارے میں