جماعتِ احمدیہ: انتخابات کے بائیکاٹ کا اعلان

پاکستان میں جماعت احمدیہ نے ووٹر فہرستوں میں امتیازی سلوک برتنے پر احتجاجاً عام انتخابات کے بائیکاٹ کا اعلان کیا ہے۔

جماعت احمدیہ کے ترجمان سلیم الدین کے مطابق مذہبی بنیاد پر احمدیوں کے لیے الگ ووٹر فہرستیں امتیازی سلوک اور مخلوط انتخابات کی روح کے خلاف ہیں اور احتجاجاً عام انتخابات کے بائیکاٹ کر رہے ہیں۔

اس سلسلے میں متعدد بار الیکشن کمیشن سے رابطہ کرنے کی کوشش کی گئی مگر الیکشن کمیشن کے مختلف اعلیٰ اہلکار ایک دوسرے کا نام لے کر بات کرنے سے گریز کرتے رہے۔

جماعت احمدیہ کے ترجمان سلیم الدین کی جانب سے جاری ہونے والے ایک بیان کے مطابق ووٹر فہرستوں میں تمام پاکستانی شہری جن میں مسلمان، مسیحی، یہودی، ہندو، پارسی، سکھ یا دیگر مذاہب سے تعلق رکھتے ہیں، ایک فہرست میں اکٹھے ہیں لیکن صرف احمدی برادری کے لیے الگ ووٹر لسٹ بنائی گئی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ یہ مذہبی تفریق اور تعصب کی بدترین مثال ہے اور مخلوط انتخابات کی حقیقی روح کے منافی ہونے کے ساتھ حقوق انسانی کے عالمی اعلامیہ کی خلاف ورزی ہے۔

بیان کے مطابق حکومت کو تحریری طور پر اور الیکشن کمیشن کو باضابطہ ملاقات میں اس موقف کے بارے میں آگاہ کیا گیا لیکن اس سلسلے میں ابھی تک کوئی مثبت قدم نہیں اٹھایا گیا۔

یاد رہے کہ جماعتِ احمدیہ نے انیس سو ستتر کے بعد ہونے والے کسی بھی عام انتخابات میں حق رائے دہی استعمال نہیں کیا ہے۔

اسی بارے میں