51 بھارتی ماہی گیر رہا کرنے کا حکم

پاکستان کے نگراں وزیراعظم میر ہزار خان کھوسہ نے انسانی ہمدردی کی بنیاد پر 51 بھارتی ماہی گیروں کو رہا کرنے کا حکم جاری کیا ہے۔

نگراں وزیر اعظم نے یہ حکم جمعہ کو ایک اعلیٰ سطح کے اجلاس میں جاری کیا، جس میں نگراں وزیرِداخلہ، وزیرِ خارجہ اور سندھ کے وزیراعلیٰ قربان علوی بھی شریک تھے۔

وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ انہیں امید ہے کہ بھارتی حکومت بھی اس جذبہ خیرسگالی کا اظہار کرے گی اور پاکستانی ماہی گیروں کو رہا کیا جائے گا۔

وزیر اعظم کو بتایا گیا ہے کہ پاکستانی کی جیلوں میں 482 بھارتی ماہی گیر اور بھارتی جیلوں میں 496 پاکستانی ماہی گیر قید ہیں، انہوں نے وزارت خارجہ اور داخلہ کو بھارتی ماہی گیروں کی رہائی کے انتظامات کرنے کی ہدایت کی۔

خیال رہے کہ پچھلے دنوں لاہور کی جیل میں بھارتی شہری سربجیت سنگھ اور بھارت کی جیل میں پاکستانی قیدی ثنااللہ کی ہلاکت پر دونوں ممالک کے تعلقات خراب ہوگئے تھے۔

پاکستان اور بھارت کے درمیان تعلقات میں ڈرامائی تبدیلی اور خوشگوار ماحول کا فائدہ ہمیشہ دونوں ملکوں کے ماہی گیروں کو ہوتا ہے جبکہ کشیدہ حالات میں بھی یہی ماہی گیر سب سے زیادہ متاثر ہوتے ہیں۔

پاکستان اور بھارت کی حکومتیں اکثر ان ماہی گیروں کو گرفتار کرتی ہیں اور ان پر سمندری حدوود کی خلاف ورزی کا الزام لگایا جاتا ہے۔

اسی بارے میں