عمران کی زخمی ہونے کے بعد پہلی چہل قدمی

Image caption عمران خان کے حامی ان کی صحت کے لیے دعا مانگ رہے ہیں

انتخابات سے چار دن قبل جلسے کے دوران لفٹر سے گر کر زخمی ہونے والے پاکستان تحریکِ انصاف کے سربراہ عمران خان نے پہلی بار بغیر سہارے کے چہل قدمی کی ہے۔

منگل کی دوپہر تحریکِ انصاف کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ شوکت خانم میموریل ہسپتال میں زیرِعلاج عمران خان نے خاص طور پر بنائی گئی ریڑھ کی ہڈی کی سپورٹ کی مدد سے زخمی ہونے کےبعد پہلی بار چہل قدمی کی ہے۔

عمران خان سات مئی کو زخمی ہونے کے بعد پہلی بار بغیر سہارے کے کھڑے ہوئے اور انھوں نے ہسپتال میں تین سو میٹر تک چہل قدمی کی، جس دوران انھیں درد نہیں ہوا۔

بیان میں امید ظاہر کی گئی ہے کہ عمران خان کو بدھ کی سہ پہر تک ہستپال سے فارغ کر دیا جائے گا۔

واضح رہے کہ عمران خان سات مئی کو لاہور میں عمران خان غالب مارکیٹ میں جلسے کے لیے تیار کردہ سٹیج پر لفٹر کے ذریعے جا رہے تھے کہ توازن کھونے پر اپنے محافظین سمیت نیچےگر گئے۔

جلسے کا سٹیج زمین سے بارہ سے پندرہ فٹ کی بلندی پر بنایا گیا تھا اور عمران خان چوٹ لگنے کے باعث نیم بےہوش ہوگئے تھے۔ اس کے بعد انھیں شوکت خانم ہسپتال میں داخل کرا دیا گیا تھا۔

آٹھ مئی کو ہسپتال کے چیف ایگزیکٹو افسر ڈاکٹر فیصل نے صحافیوں کو بتایا تھا کہ عمران خان کی ریڑھ کی ہڈی محفوظ ہے تاہم ان کی کمر کی ہڈی میں فریکچر ہوا ہے جب کہ سر میں بھی زخم آئے ہیں۔

تحریکِ انصاف کے جاری کردہ بیان میں کہا گیا کہ عمران خان کی ریڑھ کی ہڈی کے متعدد ایکسرے کیے گئے ہیں جن کے مطابق ان کے ریڑھ کی ہڈی بہت خوبی سے صحت یاب ہو رہی ہے اور مہرے اپنی جگہ پر درست طریقے سے بیٹھ رہے ہیں۔

بیان کے مطابق ریڈیالوجسٹوں اور سرجنوں کی ایک ٹیم نے تحریکِ انصاف کے رہنما کے ایکسرے دیکھے اور وہ اب تک کیے جانے والے علاج سے مطمئن ہیں۔

اسی بارے میں