جان محمد بلیدی کے بھتیجے ہلاک

Image caption چراغ احمد کے قتل کا یہ واقعہ جمعے کو تربت کے علاقے بلیدہ میں پیش آیا

پاکستان کے صوبے بلوچستان کے وزیرِ اعلیٰ کے ترجمان جان محمد بلیدی کے بھتیجے کو نامعلوم افراد نے فائرنگ کر کے ہلاک کر دیا۔

جان محمد بلیدی کے بھتیجے چراغ احمد کے قتل کا یہ واقعہ جمعے کو تربت کے علاقے بلیدہ میں پیش آیا۔

لیویز فورس تربت کے ایک اہلکار نے فون پر بی بی سی کو بتایا کہ نامعلوم موٹر سائیکل سواروں نے چراغ احمد کو بلیدہ میں فائرنگ کر کے ہلاک کیا۔

اہلکار کے مطابق مقتول چراغ احمد لیویز فورس میں ملازم تھے۔

دریں اثناء بلوچستان کے کالج اساتذہ نے ڈگری کالج خضدار کے اسسٹنٹ پروفیسر کے قتل کے خلاف جمعہ کو بلوچستان میں کلاسز کا بائیکاٹ کیا ۔

خیال رہے کہ جمعرات کو نامعلوم موٹر سائیکل سواروں نے ڈگری کالج خضدار کالج کے دو اساتذہ پر فائرنگ کی تھی۔

اس حملے میں ڈگری کالج خضدرا کے معاشیات کے اسسٹنٹ پروفیسر عبدالرزاق ہلاک جبکہ دوسرے زخمی ہو گئے تھے۔

اس واقعہ کے خلاف خضدار سمیت دیگر علاقوں میں کالج اساتذ ہ نے بطور احتجاج جمعے کو کلاسز کا با ئیکاٹ کیا ۔

کالج اساتذہ کی تنظیم بلوچستان پروفیسرز اینڈ لیکچررز ایسو سی ایشن کے کوئٹہ میں ہونے والے ہنگامی اجلاس میں اسسٹنٹ پروفیسر کے قتل کے خلاف تین روزہ سوگ اور سنیچر کو بھی کلاسز کے بائیکاٹ کا فیصلہ کیا۔

ادھر ڈیرہ بگٹی میں مقامی انتظامیہ نے امن لشکر سے تعلق رکھنے والے تین افراد کی لاشیں برآمد کر لیں۔

ان افراد کو رواں سال جنوری میں نامعلوم افراد نے ایک جھڑپ کے بعد اغوا کیا تھا۔

نامعلوم افراد نے ان افراد کو گزشتہ روز ہلاک کر کےان کی لاشیں نالے میں پھینک دی تھیں۔

اسی بارے میں