’30 اگست تک انسدادِ دہشتگردی پالیسی تیار کریں‘

فائل فوٹو
Image caption ریاست اور عوام کے دشمنوں کے خلاف بھر کارروائی کی جائے گی: نواز شریف

پاکستان کے وزیرِاعظم نے وزیرِ داخلہ کو ہدایت کی ہے کہ وہ تیس اگست تک انسدادِ دہشت گردی کی پالیسی کے مسودے کو حتمی شکل دے دیں۔

وزیراعظم ہاؤس کی جانب سے جمعرات کو جاری ہونے والے ایک بیان کے مطابق نواز شریف نے اسلام آباد میں چوہدری نثار علی خان کے ساتھ ملاقات کی جس میں ملک میں جاری حالیہ دہشت گردی کے واقعات پر تفصیلی بات چیت ہوئی۔

ملاقات میں نواز شریف نے پاکستان کے دشمنوں کے خلاف لڑنے کے عزم کا اظہار کرتے ہوئے چوہدری نثار کو ہدایت کی کہ وہ تیس اگست تک انسدادِ دہشت گردی کی پالیسی کے مسودے کو حتمی شکل دے دیں۔

وزیرِ اعظم نے جمعرات کو پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ کی پولیس لائن میں نمازِ جنازہ کے دوران خودکش دھماکے میں اعلیٰ پولیس اہلکاروں سمیت تیس افراد ہلاکت کی شدید مذمت کی۔

نواز شریف کا کہنا تھا کہ ریاست اور عوام کے دشمنوں کے خلاف بھرپور کارروائی کی جائے گی۔

انھوں نے قانون نافذ کرنے والے اہلکاروں کی بہادری کو سلام پیش کرتے ہوئے وزیرِداخلہ کو ہدایت کی کہ وہ ہلاک اور زخمی ہونے والے افراد کے لواحقین کو ہر ممکن مدد فراہم کریں۔

خیال رہے کہ حکومت نے دہشت گردی کے خاتمے کے لیے قومی پالیسی کے مسودہ تیار کرنے کا کام شروع کیا تھا۔

حکومت سیاسی جماعتوں سے مشاورت کی بنیاد پر پالیسی تیار کرنے کا ارادہ رکھتی تھی تاہم وزیرداخلہ چوہدری نثار علی خان کے اصرار پر وزیراعظم نواز شریف نے پالیسی کا مسودہ پہلے تیار کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔

بعض سرکاری افسران نے موجودہ حکومت کو اس عمل کے ابتدائی دنوں میں ’قومی سلامتی پالیسی‘ کے نام پر ایک دستاویز تیار کر کے دیا تھا جسے چوہدری نثار علی خان نے پرانا اور غیر متعلقہ قرار دے کر مسترد کر دیا تھا۔

اسی بارے میں