اسلام آباد میں مدرسے پر فائرنگ، تین ہلاک

پاکستان کے دارالحکومت اسلام آباد کے نواحی علاقے میں ایک مدرسے پر فائرنگ کے نتیجے میں مدرسے کے مہتمم سمیت تین افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

پولیس کے مطابق یہ واقعہ اسلام آباد ہائی وے پر واقع مدرسے میں ہوا۔

اسلام آباد کے ررول سرکل کے ایس پی شبیہ احمد کے مطابق یہ واقعہ اُس وقت پیش آیا جب لوگ نماز پڑھ کر مسجد کے باہر کھڑے تھے۔

ایس پی شبیہ احمد کے مطابق مدرسے کے مہتمم قاری محمد عارف اور دیگر افراد نماز کی ادائیگی کے بعد باہر کھڑے تھے کہ موٹر سائکل پر سوار دو نامعلوم مسلح افراد نے اندھا دھند فائرنگ کر دی۔

فائرنگ کے نتیجے میں مدرسے کے مہتمم قاری محمد عارف، طالبعلم محمد شاکر اور ایک نمازی درویش موقع پر ہی ہلاک ہوگئے۔

پولیس ذرائع نے ہمارے نامہ نگار شہزاد ملک کو بتایا کہ اس مدرسے کا نام مدینۃ العلم ہے۔ اس مدرسے کے بارے میں بتایا جاتا ہے کہ یہ دیوبند مسلک سے تعلق ہے۔

اسلام آباد کی پولیس پہلے تو یہ واقعہ راولپنڈی کی حدود میں ہونے کی تصدیق کر رہے تھے جبکہ راولپنڈی پولیس کے حکام ان کے حدود میں یہ واقعہ ہونے کی تردید کرتے رہے۔ پولیس نے اس واقعہ سے متعلق مقدمہ درج کرکے تفتیش شروع کر دی ہے۔

دوسری جانب اسلام آباد کے سیکٹر ایف ایٹ ٹو میں واقع ایک مسجد کے سامنے فائرنگ میں ایک شخص اور اس کا دو سالہ بیٹا زخمی ہوئے ہیں۔

پولیس کا کہنا ہے کہ اس واقعے کی تفتیش کی جار رہی ہے۔

اسی بارے میں