’اگر صدر فرار ہوئے تو ذمہ دار کون ہوگا‘

Image caption صدر مملکت کو الوداعی گارڈ آف آنر کو روکنے کے لیے بھی ایک درخواست سپریم کورٹ میں دائر کی گئی ہے

صدر آصف علی زرداری کا نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ میں ڈالنے کے لیے سپریم کورٹ میں درخواست دائر کرنے والے درخواست گزار کے مطابق صدر کے عہدے کی معیاد آٹھ ستمبر کو ختم ہو رہی ہےاور اگر اس دوران وہ ملک سے فرار ہوگئے تو عدالت اس کا تعین کرے کہ اس کی ذمہ داری کس پر عائد ہوگی۔

جٹسس خلجی عارف حیسن کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے دو رکنی بینچ نے اس درخواست کی سماعت کی تو ڈپٹی اٹارنی جنرل محمد عمران نے عدالت کو بتایا کہ وفاق کو ایک روز قبل ہی اس درخواست پر نوٹس ملا ہے جس کے جواب کے لیے کچھ وقت چاہیے۔

اُنہوں نے کہا کہ اس درخواست پر تفصیلی جواب دینا ہے اس کے لیے اُنہیں کچھ وقت دیا جائے۔

مطمئن زرداری اور سفید دھوتی

اسامہ آپریش: ’صدر اور آرمی چیف کا رابطہ نہیں ہوا‘

درخواست گزار شاہد اورکزئی کا کہنا تھا کہ اُن کی درخواست محض ڈیڑھ صفحے پر مشتمل ہے اور اگر حکومت چاہے تو چند منٹوں میں اس کا جواب دے سکتی ہے۔

اُنہوں نے کہا کہ نئی وفاقی حکومت پُرانے صدر کا دفاع کر رہی ہے جو کہ اُن کے لیے حیرت انگیز ہے۔

بینچ کے سربراہ کا کہنا تھا کہ جب تک اس بارے میں فیڈریشن کا جواب نہیں آ جاتا اُس وقت تک عدالت اس سے متعلق اپنی رائے قائم نہیں کر سکتی۔

یاد رہے کہ درخواست گُزار نے موقف اختیار کیا ہے کہ ایبٹ آباد میں القاعدہ کے رہنما اُسامہ بن لادن کے خلاف امریکی فوج کی کارروائی کے بارے میں صدر آصف علی زرداری کو پہلے سے علم تھا لیکن اُنہوں نے پاکستانی افواج کو اس بارے میں آگاہ نہیں کیا تھا۔

درخواست میں مزید کہا گیا ہے کہ صدر مملکت اس واقعہ سے متعلق بنائے گئے عدالتی کمیشن کے سامنے بھی پیش نہیں ہوئے تھے۔

نامہ نگار شہزاد ملک کے مطابق درخواست گُزار کا کہنا تھا کہ امریکی افواج کے سابق سربراہ مائیک مولن کو لکھے گئے متنازع میمو کے مرکزی کردار حیسن حقانی ملک سے فرار ہو چکے ہیں۔

اُنہوں نے کہا کہ حسین حقانی صدر کے قریبی ساتھیوں میں سے ہیں اس لیے اُنہیں خطرہ ہے کہ آصف علی زرداری بھی عہدہ صدارت کی مدت ختم ہونے کے بعد ملک سے فرار ہو جائیں گے اس لیے اُن کانام ای سی ایل میں ڈال دیا جائے۔

عدالت نے اس درخواست کی سماعت دس ستمبر تک کے لیے ملتوی کر دی۔

دوسری طرف صدر مملکت کو الوداعی گارڈ آف آنر کو روکنے کے لیے بھی ایک درخواست سپریم کورٹ میں دائر کی گئی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ آصف علی زرداری نے بطور سپریم کمانڈر اپنی ذمہ داریاں احسن طریقے سے ادا نہیں کیں۔ عدالت سے اس درخواست کی جلد سماعت کرنے کی بھی استدعا کی گئی ہے۔

اسی بارے میں