پی پی150: نواز لیگ کے امیدوار کامیاب

Image caption دوبارہ گنتی کے بعد میاں مرغوب کے ستتر ووٹ بڑھ گئے ہیں

پاکستان کے صوبہ پنجاب کے دارالحکومت لاہور کے صوبائی حلقے پی پی 150 میں دوبارہ گنتی کے بعد غیر حتمی و غیر سرکاری نتائج کے مطابق مسلم لیگ ن کے میاں مرغوب احمد ہی کامیاب قرار پائے ہیں۔

غیر حتمی اور غیر سرکاری نتیجے کا اعلان کرتے ہوئے ریٹرنگ آفیسر جاوید اقبال وڑائچ نے بتایا کہ دوبارہ گنتی کے بعد میاں مرغوب احمد نے 18526 ووٹ حاصل کیے ہیں جبکہ پاکستان تحریک انصاف کے مہر واجد کے ووٹوں کی تعداد 18074 ہے۔ انھوں نے کہا کہ 1138 ووٹ مسترد کیے گئے ہیں۔

ضمنی انتخابات سے عوامی رحجانات کا اندازہ

ضمنی انتحابات میں میاں مرغوب نے مہر واجد کو 376 ووٹوں سے شکست دی تھی لیکن دوبارہ گنتی کے بعد یہ فرق 453 تک جا پہنچا ہے یعنی دوبارہ گنتی کے بعد میاں مرغوب کے 77 ووٹ بڑھ گئے ہیں۔

ضمنی انتخابات کے بعد پاکستان تحریکِ انصاف نے یہ دعویٰ کیا تھا کہ حلقہ پی پی 150 میں دھاندلی ہوئی ہے۔

چیف الیکشن کمشنر تصدق حسین جیلانی نے تحریکِ انصاف کی شکایت کا از خود نوٹس لیتے ہوئے اس ریٹرنگ آفیسر کے نتائج کو کالعدم قرار دیا تھا اور حکم دیا تھا کہ پی پی 150 میں دوبارہ گنتی کروائی جائے۔

دوبارہ گنتی کا عمل تین روز جاری رہا جس کے دوران 147 پولنگ سٹیشنوں کے پریزائیڈنگ آفیسروں کے سامنے ووٹوں کی دوبارہ گنتی کی گئی۔ یہ عمل آج مکمل ہوا اور اس کے بعد بھی میاں مرغوب کو ہی کامیاب قرار دیا گیا۔

پی پی 150 میں دھاندلی کا معاملہ تحریکِ انصاف سے تعلق رکھنے والے اپوزیشن لیڈر میاں محمود الرشید نے پنجاب اسمبلی میں بھی اٹھایا اور احتجاجاً اجلاس سے واک آوٹ بھی کیا۔

مال روڈ پر تحریکِ انصاف کی قیادت اور کارکنوں کی جانب سے مبینہ دھاندلی کے خلاف احتجاجی کیمپ بھی لگایا گیا تھا جسے پولیس نے مال روڈ پر دفعہ 144 نافذ ہونے کے باعث اکھاڑ دیا تھا۔

اس موقعے پر پولیس اور تحریکِ انصاف کے کارکنوں کےدرمیان جھڑپ بھی ہوئی تھی جس کے بعد پولیس نے لاٹھی چارج کر کے تحریک انصاف کے کارکنوں کو گرفتار کیا تھا۔

اسی بارے میں