’بات وہیں سے شروع کریں گے جہاں 1999 میں چھوڑی تھی‘

Image caption نواز منموہن ملاقات اتوار یعنی 29 ستمبر کو ہونے کی توقع کی جا رہی ہے

پاکستانی وزیر اعظم میاں نواز شریف نے امید ظاہر کی ہے کہ ہندوستان کے وزیر اعظم منموہن سنگھ سے نیو یارک میں ملاقات سے دونوں ممالک کے درمیان تعلقات میں بہتری کی بات آگے بڑھے گی۔

نیویارک میں موجود پاکستانی وزیر اعظم نے یہ بات اقوام متحدہ کے ہیڈ کوارٹر میں مختلف اجلاسوں کے درمیان میں صحافیوں سے بات کرتے ہوئے کہی۔

دونوں رہنماؤں کی ملاقات اتوار یعنی 29 ستمبر کو ہونے کی توقع کی جا رہی ہے۔

دہلی میں جاری کیے گئے ایک بیان میں منموہن سنگھ کے حوالے سے کہا گیا ہے کہ وہ پاکستان کے وزیر اعظم کے ساتھ نیویارک میں ملاقات کے منتظر ہیں۔

نواز شریف کا کہنا تھا ’مجھے تو وزیر اعظم منموہن سنگھ سے ملاقات کرکے بہت خوشی ہوگی اور مجھے امید ہے کہ ہم لوگ وہیں سے بات چیت شروع کریں گے جہاں سے ہم نے سال 1999 میں چھوڑی تھی۔‘

نواز شریف اپنے گزشتہ دور کا حوالہ دے رہے تھے جب 1999 میں وہ اس وقت کے بھارتی وزیر اعظم اٹل بہاری واجپئی کے ساتھ ملے تھے اور دونوں ممالک کے تعلقات میں بہت مثبت پیش رفت ہوئی تھی۔

کچھ ہی عرصے کے بعد نواز شریف کی حکومت کا تختہ فوجی جنرل پرویز مشرف نے الٹ دیا تھا۔

بھارتی وزیر اعظم منموہن سنگھ اور پاکستانی وزیر اعظم نواز شریف کی 29 ستمبر کو نیو یارک میں ملاقات ہونے کی بات بھارت کی طرف سے کہی گئی ہے۔

اس سے پہلے بھارتی وزیر اعظم منموہن سنگھ نے بھی دہلی سے امریکہ روانہ ہوتے وقت کہا تھا کہ وہ پاکستانی وزیر اعظم کے ساتھ ملاقات کریں گے۔

بھارتی وزیر اعظم منموہن سنگھ نے کہا کہ، "میں نے اپنے کچھ پڑوسی ممالک جیسے بنگلہ دیش، نیپال اور پاکستان کے راجيادھيكشو کے ساتھ ملاقاتوں کی طرف دیکھ رہا ہوں۔"

ایسی اطلاعات ہیں کہ پاکستانی وزیر اعظم نیو یارک میں بھارتی وزیر اعظم کے ساتھ ان کے ہوٹل میں 29 ستمبر کو صبح کے ناشتے پر ملاقات کریں گے۔

بھارت پاکستان سے مطالبہ کرتا رہا ہے کہ لشکر طیبہ گروہ کے حافظ سعید کو بھارت کے سپرد کر دیا جائے کیونکہ بھارت حافظ سعید کے ممبئی حملوں میں ملوث ہونے کا الزام لگاتا رہا ہے۔

دونوں ممالک کے درمیان حالیہ کشیدگی کے بعد سے بھارت میں حزب اختلاف کی جماعت بی جے پی تو سرے سے اس وقت پاکستان سے بات چیت کی مخالفت کر رہی ہے۔

لیکن وزیر اعظم منموہن سنگھ نے اس مخالفت کے باوجود پاکستانی وزیر اعظم سے ملاقات کا فیصلہ کیا ہے۔

پاکستان کی جانب سے نواز شریف نے وزیر اعظم بننے کے بعد سے بھارت کے ساتھ تعلقات بہتر کرنے کی بات کہی ہے۔

لیکن مبصرین نیو یارک میں اس مجوزہ ملاقات سے زیادہ امیدیں وابسطہ نہیں کر رہے ہیں۔

اسی بارے میں