اور اب سرکاری ملازمین کی بس نشانہ، 17 ہلاک

Image caption گزشتہ برس بھی گل بیلہ کے علاقے میں سرکاری ملازمین کی بس کو نشانہ بنایا گیا تھا

پاکستان کے صوبہ خیبر پختونخوا کے دارالحکومت پشاور میں سرکاری ملازمین کی بس میں دھماکے میں کم از کم 17 افراد ہلاک اور 20 سے زیادہ زخمی ہوگئے ہیں۔

پشاور پولیس کا کہنا ہے کہ یہ دھماکہ جمعہ کی دوپہر گل بیلہ کے علاقے میں چارسدہ روڈ پر ایک بس میں ہوا۔

طالبان کو ہتھیار ڈالنے ہوں گے: نواز شریف

کمشنر پشاور صاحبزادہ انیس نے بی بی سی اردو سے بات کرتے ہوئے سترہ افراد کی ہلاکتوں کی تصدیق کی ہے۔

بی بی سی کے نامہ نگار کے مطابق اس بس میں سول سیکریٹریٹ کے ملازمین سوار تھے جو پشاور سے چارسدہ جا رہے تھے۔

پولیس کے مطابق دھماکہ خیز مواد بس کے پچھلے حصے میں رکھا گیا تھا جس کے پھٹنے سے بس کو شدید نقصان پہنچا۔

دھماکے کی اطلاع ملتے ہی فوری طور پر امدادی کارروائیاں شروع کر دی گئیں اور ہسپتالوں میں ہنگامی حالت نافذ کر دی گئی۔

دھماکے بعد لاشوں اور زخمیوں کو پشاور کے لیڈی ریڈنگ ہسپتال اور چارسدہ کے ضلعی ہیڈکوارٹر ہسپتال منتقل کر دیا گیا۔ طبی ذرائع کے مطابق زخمیوں میں سے بعض کی حالت تشویشناک ہے اور ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ ہے۔

واضح رہے کہ گذشتہ برس جون میں بھی گل بیلہ کے علاقے میں ہی اسی طرح سرکاری ملازمین کی بس کو نشانہ بنایا گیا تھا۔ اس دھماکے میں 18 افراد ہلاک اور 30 سے زائد زخمی ہوگئے تھے۔

اسی بارے میں