’فی الحال آرمی چیف ہی چیئرمین جوائنٹ چیفس ہیں‘

Image caption جنرل اشفاق پرویز کیانی کہہ چکے ہیں کہ وہ اپنی مدتِ ملازمت میں توسیع کے خواہاں نہیں

پاکستان کے وزیرِ اطلاعات پرویز رشید کا کہنا ہے کہ جنرل خالد شمیم وائیں کی ریٹائرمنٹ کے بعد ملک میں مسلح افواج کا اعلیٰ ترین عہدہ خالی نہیں ہے۔

منگل کو اسلام آباد میں صحافیوں سے بات چیت میں ان کا کہنا تھا کہ فی الحال چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی کی ذمہ داریاں برّی فوج کے سربراہ جنرل اشفاق پرویز کیانی کو سونپ دی گئی ہیں۔

’میرا دور ختم ہو رہا ہے، اب دوسروں کی باری ہے‘

سپہ سالار کی تعیناتی

خیال رہے کہ چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف جنرل خالد شمیم وائیں سات اکتوبر کو ریٹائر ہوگئے ہیں اور وزیراعظم کی جانب سے تاحال ان کے متبادل افسر کے نام کا اعلان نہیں کیا گیا ہے۔

پاکستان کے سرکاری ٹی وی کے مطابق پرویز رشید نے کہا: ’اہم عسکری تقرریاں آئین کے مطابق کی جا رہی ہیں۔‘ ان کا کہنا تھا کہ ملک کا آئین وزیراعظم کو نئی تقرریوں کے لیے 30 دن کا وقت دیتا ہے۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ ملک میں بری فوج کے نئے سربراہ کے معاملے پر دو برس سے قیاس آرائیاں جاری ہیں۔

اس سے قبل پیر کو وزیراعظم کے دفتر سے جاری ہونے والے ایک بیان میں کہاگیا ہے کہ ملک کی بری فوج کے نئے سربراہ اور مسلح افواج کے اعلیٰ ترین عہدیدار چیئرمین چیف آف جوائنٹ سٹاف کمیٹی کی تعیناتی تعیناتی کا اعلان ایک ساتھ کیا جائےگا۔

چیف آف آرمی سٹاف جنرل اشفاق پرویز کیانی کی ملازمت میں توسیع کی مدت آئندہ ماہ 29 نومبر کو ختم ہو رہی ہے۔

بیان میں بتایا گیا کہ چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی کی تعیناتی کے بارے میں ہونے والے ایک اجلاس میں وزیراعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ حکومت اپنی آئینی ذمہ داریوں سے بخوبی واقف ہے اور ہر فیصلہ قومی مفاد کو سامنے رکھ کر کیا جائےگا۔

بیان میں کہاگیا کہ چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی اور چیف آف آرمی سٹاف کی تعیناتی ایسے فیصلے ہیں جن پر فیصلہ غور و خوض کے بعد ہونا چاہیے اور دونوں اہم عہدوں پر تعیناتی کا اعلان ایک ساتھ ہی کیا جائےگا۔

جنرل اشفاق پرویز کیانی نے گذشتہ روز ایک بیان میں کہا تھا کہ وہ اپنی مدتِ ملازمت میں توسیع کے خواہاں نہیں ہیں اور 29 نومبر 2013 کو ریٹائر ہو جائیں گے۔

خیال رہے کہ نواز شریف کے گزشتہ دورِ حکومت میں بھی یہ دونوں عہدے برّی فوج کے سربراہ کے پاس ہی رہ چکے ہیں۔ ان کے دوسرے دور میں پہلے جنرل جہانگیر کرامت اور پھر جنرل پرویز مشرف چیف آف آرمی سٹاف کے ساتھ ساتھ چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی بھی تھے۔

اسی بارے میں