پاکستان:حکمران جماعت کی ایم این اے کی رکنیت منسوخ

Image caption مئی میں ہونے والے عام انتخابات میں سمیرا ملک نے پاکستان مسلم لیگ نون کے ٹکٹ پر الیکشن لڑا تھا

پاکستان کی سپریم کورٹ نے حکمراں جماعت پاکستان مسلم لیگ نون کی رکن قومی اسمبلی سمیرا ملک پر بی اے کی جعلی ڈگری رکھنے کا الزام ثابت ہونے پر اُن کی رکنیت منسوخ کردی ہے جبکہ الیکشن کمیشن کو اُن کے خلاف فوجداری دفعات کے تحت کارروائی کرنے کا حکم دیا ہے۔

پی ٹی آئی کی عائلہ ملک جعلی ڈگری پر نااہل

جعلی ڈگری: مزید دو ارکانِ اسمبلی کو سزا

ادھر سپریم کورٹ کا فیصلہ سُننے کے بعد سمیرا ملک کے ایک حامی کو سپریم کورٹ کے احاطے میں دل کا دورہ پڑا جو جان لیوا ثابت ہوا۔

سمیرا ملک کی تعلیمی اسناد کو اُن کے مخالف اُمیدوار ملک عمر اسلم اعوان نے چیلنج کیا تھا۔ سنہ دو ہزار آٹھ میں ہونے والے عام انتخابات میں ملک عمر اسلم نے سمیرا ملک کی بی اے کی ڈگری کو چیلنج کیا تھا تاہم فیصل آباد میں الیکشن ٹربیونل نے اس درخواست کو مسترد کردیا تھا جس کے خلاف عمر اسلم نے سپریم کورٹ میں درخواست دائر کی تھی۔

درخواست گُزار نے موقف اختیار کیا تھا کہ سمیرا ملک کی جگہ کسی دوسری اُمیدوار نے بی اے کے امتحانات دیے ہیں جبکہ وہ خود کمرہ امتحان میں نہیں بیٹھی تھیں۔ سماعت کے دوران سمیرا ملک کے وکیل عدالت میں ایسے کوئی شواہد عدالت میں پیش نہیں کرسکے جس سے اُن کی بےگناہی ثابت ہوسکتی ہو۔

اس سال مئی میں ہونے والے عام انتخابات میں سمیرا ملک نے پاکستان مسلم لیگ نون کے ٹکٹ پر الیکشن لڑا تھا اور وہ قومی اسمبلی کے حقلے این اے 69 خوشاب سے رکن قومی اسمبلی منتخب ہوئی تھیں جبکہ سنہ دو ہزار آٹھ میں وہ پاکستان مسلم لیگ قاف کے ٹکٹ پر منتخب ہوئیں تھیں۔

اس عدالتی فیصلے کے بعد سمیرا ملک کی موجودہ رکنیت بھی منسوخ ہوگئی ہے۔ واضح رہے کہ اس سے پہلے اُن کی بہن عائلہ ملک بھی جعلی ڈگری رکھنے کے الزام میں نااہل ہوچکی ہیں۔ عائلہ ملک پاکستان تحریک انصاف کی رہنما ہیں اور اُنہوں نے میانوالی سے ضمنی انتخابات میں حصہ لینا تھا۔ دونوں بہنیں پاکستان کے سابق صدر فاروق لغاری کی قریبی رشتہ دار ہیں۔

پیر کے روز چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری نے جب سمیرا ملک کے خلاف فیصلہ سُنایا تو سپریم کورٹ کے احاطے میں موجود اُن کے حامی محمد ریاض کو دل کا دورہ پڑا جو جان لیوا ثابت ہوا۔ محمد ریاض کے بارے میں بتایا جاتا ہے کہ وہ اسسٹنٹ کمشنر صدر سرکل اسلام آباد کا ریڈر تھااور اس سے پہلے بھی وہ عارضہ قلب میں مبتلا تھا۔

اسی بارے میں