بلوچستان: ہرنائی سے کوئلے کے آٹھ کان کن اغوا

Image caption بلوچستان میں کوئلے کے کان کنوں کے اغوا کے واقعات پہلے بھی پیش آ چکے ہیں

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے ضلع ہرنائی میں حکام کے مطابق نامعلوم مسلح افراد نے کوئلے کے آٹھ کان کنوں کو اغوا کر لیا ہے۔

حکام کے مطابق منگل اور بدھ کی درمیانی شب کو مسلح افراد نے ہرنائی کے علاقے شاہرگ میں واقع کوئلے کی ایک نجی کان سے آٹھ کان کنوں کو اغوا کیا۔

اغوا کیے جانے والے افراد کا تعلق صوبہ خیبر پختونخوا کے علاقے شانگلا سے ہے۔

ابھی تک کسی تنظیم نے اس واقعے کی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے۔

کان میں دھماکے سے اکیس کان کن ہلاک

لیویز اور سکیورٹی اہلکاروں نے کان کنوں کے تلاش شروع کر دی ہے تاہم ابھی تک کوئی سراغ نہیں مل سکا ہے۔

صوبہ بلوچستان میں کوئلے کی کان کنی سب سے بڑی صعنت ہے اور میں کام کرنے والے زیادہ تر افراد کا تعلق صوبہ خیبر پختونخوا سے ہے۔

بلوچستان میں کوئلے کی کانوں میں حادثات اکثر اوقات پیش آتے ہیں۔ اس کے علاوہ مسلح افراد کی جانب سے کان کنوں کو اغوا کرنے کے واقعات پیش آتے رہتے ہیں۔ ان میں سے متعدد کان کنوں کو حکومت کا جاسوس قرار دے کر مارا بھی جا چکا ہے۔

گزشتہ سال جولائی میں صوبے کے علاقے مچھ سے کوئلے کے آٹھ کان کنوں کو اغوا کیا گیا تھا اور اس واقعے سے چند روز پہلے ہی بلوچ لیبریش آرمی کے اہلکاروں نے کوئٹہ کے نواحی علاقے ڈیگاری میں کوئلہ کے سات کان کنوں کو گولی مار کر ہلاک کر دیا تھا۔

اسی بارے میں