کراچی میں دوطالبان ہلاک

Image caption کراچی میں طالبان کی موجودگی کوئی نئی بات نہیں ہے

کراچی میں رینجرز اور پولیس سے مبینہ مقابلے میں دو مشتبہ طالبان ہلاک ہوگئے ہیں، جن کے قبضے سے اسلحہ بھی برآمد کرنے کا دعویٰ کیا گیا ہے۔

رینجرز کے ترجمان کا کہنا ہے کہ خفیہ اطلاع پر منگھو پیر کے علاقے کنواری کالونی میں چھاپا مارا گیا، جہاں ملزمان نے رینجرز پر فائرنگ کی، فائرنگ کے تبادلے میں دو مبینہ طالبان ہلاک ہوگئے، جن کی شناخت سعداللہ اور اعظم محسود کے نام سے کی گئی ہے۔

ہلاک ہونے والے طالبان کا تعلق کالعدم تحریک طالبان کے سابق سربراہ ولی الرحمان گروپ سے بتایا گیا ہے، جو گذشتہ سال جون میں ہلاک ہوگئے تھے، کراچی میں ان کا گروپ کئی علاقوں میں سرگرم ہے۔

رینجرز ترجمان کے مطابق ملزمان کے قبضے سے اسلحہ، دستی بم اور جعلی شناختی کارڈ برآمد کیے گئے ہیں۔

اس سے پہلے 13 نومبر کو گلشن بونیر میں رینجرز سے مقابلے میں بھی تین مبینہ طالبان اور رینجرز کا ایک سپاہی ہلاک ہوگئے تھے۔ رینجرز کا دعویٰ تھا کہ ملزمان عاشورہ کے روز تخریب کاری کی منصوبہ بندی کر رہے تھے۔

دوسری جانب شہر میں رینجرز کی ٹارگٹڈ کارروائیاں جاری ہیں۔ ترجمان کے مطابق سعود آباد، گلشن معمار، وائرلیس، نارتھ ناظم آباد ، صالح گوٹھ ملیر کھوکھرا پار میں بھی چھاپے مار گئے۔

اسی بارے میں