کراچی: پولیس مقابلے میں تین مبینہ طالبان ہلاک

کراچی میں سی آئی ڈی پولیس نے پولیس مقابلے میں تحریک طالبان کے تین مشتبہ کارکنوں کو ہلاک کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

ایس پی سی آئی ڈی چوہدری اسلم نے بتایا کہ جمعرات کی صبح سویرے ناردرن بائی پاس کے قریب منگھو پیر کے علاقے میں پولیس ایک خفیہ اطلاع پر کارروائی کے لیے پہنچی تو اس کا ملزمان سے مقابلہ ہوا۔

کراچی:’500 دہشتگردوں کی فہرست تیار‘

’طالبان رہنما عدنان عرف ابو حمزہ کراچی سے گرفتار‘

انھوں نے بتایا کہ مقابلے کے دوران تینوں ملزمان زخمی ہوگئے، جنھیں مقامی ہپستال پہنچایا گیا جہاں وہ زخموں کی تاب نہ لا کر ہلاک ہوگئے۔

پولیس نے ملزمان کی شناخت شہاب الدین، عمران اور سرجان کے نام سے کی ہے، جن کی عمریں 25 سے 30 سال کے درمیان ہیں۔

دوسری جانب ایڈیشنل آئی جی شاہد حیات کا کہنا ہے کہ پانچ ستمبر سے 31 دسمبر تک 601 پولیس مقابلے ہوئے ہیں جن میں 84 ملزمان مارے گئے، اسی طرح 377 ملزمان کو قتل کے الزام میں گرفتار کیا گیا ہے۔

کراچی میں ایسوسی ایشن آف بلڈرز اینڈ ڈویلپرز سے خطاب کرتے ہوئے شاہد حیات نے دعویٰ کیا کہ آپریشن کے پہلے چار ماہ میں جرائم میں 40 فیصد کمی آئی ہے لیکن جو ملزم گرفتار ہوتے ہیں انھیں سزائیں نہیں ہوتیں۔

بقول ان کے انسداد دہشت گردی کی عدالت میں 193 مقدمات زیر سماعت ہیں، جو ہائی پروفائل قتل کے بارے میں ہیں، لیکن عدالتوں کے اپنے مسائل ہیں، اس کے علاوہ وکیل عدالتوں میں پیش نہیں ہوتے۔

انھوں نے ایسوسی ایشن کو مخاطب ہوکر کہا: ’عمارت پر چار سیاسی نعرے لکھ دیے جائیں تو انھیں صاف کرانے کے لیے ہمیں لوگوں کی منت سماجت کرنی پڑتی ہے اور پیسے دینے پڑتے ہیں، اس میں سیاسی جماعتیں ملوث ہوتی ہیں، تو پھر کیوں پیسے دیتے ہیں؟ کیوں کھڑے نہیں ہوجاتے؟‘

شاہد حیات کا کہنا تھا کہ ’شہریوں کو آگے آ کر یہ بتانا ہوگا کہ کون کیا کر رہا ہے، ’چائنا کٹنگ‘ کون کروا رہا ہے، سرکاری زمینوں پر کسی طرح قبضہ کیا جاتا ہے۔

’جب حالات خراب ہوتے ہیں تو شہر قربانیاں مانگتے ہیں اور لوگ قربانیاں دیتے ہیں، ہم ایف آئی آر بھی درج نہ کرائیں اور کہیں کہ حالات ٹھیک ہوجائیں تو اس طرح حالات ٹھیک نہیں ہوں گے۔‘

کراچی پولیس چیف نے بتایا کہ جرائم پیشہ افراد کے خلاف کارروائی میں گذشتہ ایک سال میں 171 پولیس افسران اور اہل کار ہلاک ہو چکے ہیں: ’پولیس ملزمان کا پیچھا کر رہی ہے اور جواب میں وہ ان پر حملے کر رہے ہیں۔‘

دوسری جانب رینجرز نے گذشتہ 24 گھنٹوں میں 27 ملزمان کو گرفتار کر کے، سب مشین گنیں اور دوسرا اسلحہ برآمد کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔ رینجرز ترجمان کے مطابق گرفتار ملزمان کا تعلق ایک سیاسی جماعت سے ہے۔

اسی بارے میں