رینٹل پاور کیس میں پرویز اشرف پر فردِ جرم عائد

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption سابق وزیر اعظم راجہ پرویز اشرف سمیت تمام ملزمان نے صحت جرم سے انکار کیا ہے

پاکستان کے دارالحکومت اسلام آباد میں احتساب عدالت نے رینٹل پاور کیس میں سابق وزیر اعظم راجہ پرویز اشرف سمیت تمام ملزمان پر فرد جرم عائد کر دی ہے۔

تاہم تمام ملزمان نے صحت جرم سے انکار کیا ہے۔

احتساب عدالت نے رینٹل پاوڑ کیس میں راجہ پرویز اشرف سمیت تمام ملزمان پر سابق وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی کے دور میں مبینہ طور پر کرپشن اور عہدے کا غلط استعمال کرنے کے الزام میں فرد جرم عائد کی ہے۔

راجہ پرویز اشرف کے وکیل فاروق ایچ نائیک کا کہنا تھا کہ ان کے موکل پر کرپشن کے الزامات بے بنیاد ہیں، راجہ پرویز اشرف بہت جلد با عزت بری ہوں گے۔

عدالت نے کیس کی سماعت 4 فروری تک ملتوی کر دی ہے۔

سابق وزیر اعظم راجہ پرویز اشرف کا تعلق بھی پاکستان پیپلز پارٹی سے ہے اور اُنہوں نے بطور وفاقی وزیر برائے پانی وبجلی کرائے کے بجلی گھروں کے منصوبوں کی منظوری دی تھی۔

بعدازاں سپریم کورٹ نے ان میں سے کچھ منصوبوں کو کالعدم قرار دیتے ہوئے کرائے کے بجلی گھروں کے مالکان کو وہ تمام رقم واپس کرنے کا حکم دیا تھا جو اُنہوں نے حکومت پاکستان سے ایڈوانس میں حاصل کی تھی۔

سپریم کورٹ کا کہنا ہے کہ ان منصوبوں سے قومی خزانے کو اربوں روپے کا نقصان پہنچایا گیا۔

اسی بارے میں