ملالہ کی کتاب کی تقریبِ رونمائی روک دی گئی

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ’آئی ایم ملالہ‘ ملالہ یوسف زئی اور برطانوی صحافی کرسٹینا لیم نے مشترکہ طور پر لکھی ہے

پاکستان کے صوبے خیبر پختونخوا کی سول سوسائٹی کی تنظیموں نے کہا ہے کہ تحریکِ انصاف حکومت کی مداخلت پر پشاور یونیورسٹی میں ملالہ یوسف زئی کی کتاب کی تقریبِ رونمائی روک دی گئی ہے۔

باچا خان ایجوکیشن ٹرسٹ کے سربراہ ڈاکٹر خادم حسین نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے الزام لگایا کہ منگل کو ایریا سٹڈی سنٹر پشاور یونیورسٹی میں ملالہ یوسف زئی کی کتاب ’آئی ایم ملالہ‘ کی تقریب رونمائی منعقد ہونا تھی تاہم صوبائی حکومت کی براہِ راست مداخلت پر یہ تقریب روک دی گئی ہے۔ انھوں نے کہا کہ مذکورہ تقریب باچا خان ایجوکیشن ٹرسٹ، ایریا سٹڈی سنٹر اور سول سوسائٹی کی تنظیم ایس پی او کی طرف سے مشترکہ طور پر منعقد کی جانی تھی۔

انھوں نے کہا کہ پولیس کی طرف سے ان کو بتایا گیا کہ وہ سکیورٹی فراہم نہیں کر سکتے جس کی وجہ سے تقریب کا انعقاد روک دیا گیا ہے۔

ڈاکٹر خادم حسین نے مزید الزام لگایا کہ صوبائی حکومت کے دو وزرا کی طرف سے یونیورسٹی انتظامیہ پر براہ راست دباؤ ڈالا گیا کہ وہ تقریب کی اجازت نہ دے اور اس سلسلے میں بعض اہم سرکاری اہل کاروں کی جانب سے ایریا سٹڈی سنٹر کے سینئیر پروفیسروں کو ٹیلی فون بھی کیےگئے۔

انھوں نے کہا کہ تقریب میں شرکت کرنے کے لیے تمام سیاسی جماعتوں کے نمائندوں، سینئیر پروفیسروں اور سول سوسائٹی کی تنظیموں کو دعوت دی گئی تھی۔

ادھر پشاور پولیس کے سربراہ اعجاز خان نے رابطہ کرنے پر بی بی سی کو اس بات کی تصدیق کی کہ بعض سکیورٹی خدشات کے باعث کتاب کی تقریبِ رونمائی روک دی گئی ہے۔

انھوں نے کہا کہ تقریب کے منتظمین کی طرف سے پولیس کو پہلے سے کوئی اطلاع نہیں دی گئی تھی جبکہ یونیورسٹی انتظامیہ کی جانب سے بھی تقریب کے انعقاد پر بعض اعتراضات کیے گئے تھے جس کے باعث تقریب کی اجازت نہیں دی گئی۔

اس سلسلے میں صوبائی حکومت کا موقف معلوم کرنے کے لیے وزیر اطلاعات شاہ فرمان سے بار بار رابطے کی کوشش کی گئی لیکن حسب معمول انھوں نے ٹیلی فون اٹھانا گوارا نہیں کیا۔

خیال رہے کہ ملالہ یوسف زئی کی کتاب ’آئی ایم ملالہ’ گذشتہ سال اکتوبر میں امریکہ اور برطانیہ میں شائع کی گئی تھی۔ یہ کتاب ملالہ یوسف زئی اور برطانوی صحافی کرسٹینا لیم نے مشترکہ طور پر لکھی ہے۔

یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ پنجاب کے نجی سکولوں کی ایک تنظیم آل پاکستان پرائیویٹ سکولز فیڈریشن کی طرف سے ملالہ یوسف زئی کی کتاب آئی ایم ملالہ پر پابندی عائد کر دی گئی تھی۔ اس کے علاوہ تحریک طالبان پاکستان کی جانب سے بھی کتاب فروخت کرنے والے دکان داروں کو دھمکیاں دی گئی تھیں۔

اسی بارے میں